پاکستان میڈیا ڈیولپمنٹ اتھارٹی کے نام سے نیا قانون آزادی صحافت پر حملہ ہے

فرانس میں مقیم پاکستانی صحافیوں نے اس قانون کے خلاف سفارت خانہ پاکستان پیرس کو اپنے تحفظات سے اگاہ کیا

sahibzada atiq صاحبزادہ عتیق الر حمن منگل 21 ستمبر 2021 13:23

پاکستان میڈیا  ڈیولپمنٹ اتھارٹی کے نام سے نیا قانون آزادی صحافت پر ..
پیرس (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 ستمبر2021ء) فرانس میں مقیم پاکستانی صحافیوں نے پاکستان میڈیا ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے قانون کے خلاف  سفارت خانہ  پاکستان پیرس کو اپنے تحفظات سے اگاہ کیا، پاکستانی صحافیوں نے مشترکہ طور پر قائم مقام سفیر پاکستان امجد عزیز قاضی سے ملاقات کی ، اس موقع پر پریس قونصلر دانیال گیلانی اور ہیڈ آف چانسری عباس سرور قریشی بھی موجود تھے۔

 

صحافیوں نے قائم مقام سفیر   پاکستان کو ایک احتجاجی یادداشت بھی  پیش کی ۔ فرانس میں مقیم صحافیوں کا کہنا ہے کہ موجودہ حکومت میڈیا کو کنٹرول کرنے کے لیے پاکستان ڈیولپمنٹ اتھارٹی کے نام سے نیا قانون آزادی صحافت پر حملہ ہے۔  یہ مجوزہ قانون آزادی اظہار رائے کو دبانے کے مترادف ہے۔

(جاری ہے)

پاکستان میڈیا ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے قانون کے تحت حکومت پاکستان صحافیوں کو کنٹرول کرنا چاہتی ہے ۔

صحافت کوآمرانہ سوچ کےساتھ کنٹرول کرنا کسی صورت قابل قبول نہیں ۔ میڈیا ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے قیام کا قانون ناصرف آزادی صحافت بلکہ جمہوری اقدار کے خلاف کالا قانون ہے۔  آزادی صحافت کے بغیر جمہوریت کا تصور ممکن نہیں ۔ اس لیے حکومت سنسرشپ اور غیر قانونی میڈیا ڈویلپمنٹ اتھارٹی بل جسے  قانون سازی  سے باز رہے ۔ آزادی اظہار رائے بنیادی آئینی حق ہے،  اس طرح کی قانون سازی سے ملک سے باہر  پاکستان کے بارے منفی تاثر جائے گا ۔

فرانس میں مقیم پاکستانی تمام صحافی حکومت پاکستان کی طرف سے اس نئے قانون کے حوالے سے تحفظات ہیں اور اگر ہمارے تحفظات کو دور نہیں کیا گیا تو اس حوالے سے ہم یورپ بھر میں احتجاج اور یورپین پارلیمنٹ میں آواز اٹھائیں گے ۔

آج جو کچھ پاکستان میں صحافیوں کے ساتھ ہو رہا ہے وہ کھبی  آمرانہ دور میں بھی نہیں ہوا ہے ۔

فرانس میں مقیم تمام صحافی تنظیمیں اس حوالے سے پریشان ہیں وہ آزادی صحافت کیلئے متحد ہو کر اپنا کردار ادا کریں گے ۔ اور موجودہ متنازع میڈیا ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے قانون کو مسترد کرتے ہیں ۔ اور اس کے خلاف ہر فورم  پر آواز اٹھائیں گے ۔ ہماری حکومت سے درخواست ہے کہ ہمارے  تحفظات کو دور کیا جائے اور ملک میں  آزادی اظہار رائے اور میڈیا کی آزادی کو یقینی بنایا جا سکے ۔
سفیر پاکستان اور پریس قونصلر نے صحافیوں کو یقین دہانی کرائی کہ ان کے مطالبات فوری طور پر حکومت پاکستان تک پہنچا دئے جائیں گے۔