ایچ ڈی اے ، واسا اور بلدیہ ملازمین کی ہڑتال کے باعث شہر سیوریج کے گندے پانی میں ڈوب گیا

جگہ جگہ کچرے کے ڈھیر سے آلودگی بھی بڑھنے لگی ہے جس کی وجہ سے وبائی مراض پھوٹنے کا خدشہ ہے

اتوار 5 دسمبر 2021 20:25

حیدرآباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 05 دسمبر2021ء) امیر جماعت اسلامی ضلع حیدرآباد عقیل احمد خان ، نائب امیر عبدالقیوم شیخ نے کہا ہے کہ ایچ ڈی اے ، واسا اور بلدیہ ملازمین کی ہڑتال کے باعث شہر سیوریج کے گندے پانی میں ڈوب گیا ہے اور جگہ جگہ کچرے کے ڈھیر سے آلودگی بھی بڑھنے لگی ہے جس کی وجہ سے وبائی مراض پھوٹنے کا خدشہ ہے، انتظامیہ جلد از جلد ملازمین کے مسائل حل کرے، ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ شہر کا سیوریج کے پانی سے ڈوبا ہوا ہے گلی محلوں میں جگہ جگہ پانی جمع اور گندگی کے ڈھیر ماحولیاتی آلودگی کے ساتھ مختلف موذی امراض کو جنم دے رہے ہیں لیکن انتظامیہ ملازمین کے مسائل حل کرنے کے بجائے آنکھیں بند کے بیٹھی ہے ، شہر کے اکثر راستے گندے پانی کے تالاب میں تبدیل نظر آتے ہیں، گندہ پانی علاقہ مکینوں سمیت وہاں سے گزرنے والے شہریوں کیلئے وبال جان بن گیا ہے جبکہ گندہ پانی کھڑا ہونے کی وجہ سے سڑک بھی ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہوگئی ہے، نماز کے اوقات میں مساجد کے باہر پانی کھڑا نظر آتا ہے،کاروباری مراکز کلاتھ مارکیٹ گندے پانی میں ڈوبا ہے جس کے باعث تاجروں اور شہریوں بالخصوص اسکول کے بچے خواتین ، بچوں اور ضعیف افراد کو چلنے پھرنے میں شدید دشواری کا سامنا ہے ، کئی دن گزر جانے کے باوجود سڑکوںپر سیوریج کا پانی جمع ہے، اگر گندہ پانی شہری علاقوں سے نہیں نکالا گیا تو گندا پانی دوکانوں اور علاقہ مکینوں کے گھروں میں داخل ہو جائے گا، انہوں نے کہا کہ شہرگندے پانی میں ڈوبا ہوا ہے لیکن انتظامیہ اور متعلقہ محکموں کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگ رہی ہے انتظامیہ ملازمین کے مسائل حل کرنے میں سنجیدہ نہیں دکھائی دیتی اور نہ ہی کوئی اقدام کئے جارہے ہیں اگر ملازمین کے مسائل حل نہ ہوئے تو شہر گندے پانی میںمکمل ڈوب جائے گا، انہوں نے سندھ کے وزیر بلدیات سمیت اعلیٰ حکام سے پرزور مطالبہ کیا کہ صفائی ستھرائی کی ابتر صورتحال کو بہتر کیا جائے اور ملازمین کے مسائل فوری طور پر حل کیے جائیں۔

حیدرآباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments