کراچی،عزیز آباد میں سوفٹ ویئر انجینئر نے گھر کے اندر ایک شخص کو گولیاں ماردیں، اپنے ہی گھر والوں کو یرغمال بنایا ،پھر پولیس مقابلے میں مارا گیا

جس طرح ملزم نے مقابلہ کیا اس سے ملزم تربیت یافتہ لگتا ہے، جائے وقوع سے 4افراد کو حراست میں لیا گیا ، پولیس

ہفتہ اپریل 14:54

کراچی،عزیز آباد میں سوفٹ ویئر انجینئر نے گھر کے اندر ایک شخص کو گولیاں ..
کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 29 اپریل2017ء) کراچی کے علاقے عزیز آباد میں سوفٹ ویئر انجینئر نے گھر کے اندر ایک شخص کو گولیاں ماردیں، اپنے ہی گھر والوں کو یرغمال بنایا اور پھر پولیس مقابلے میں مارا گیا۔پولیس کے مطابق جس طرح ملزم نے مقابلہ کیا اس سے ملزم تربیت یافتہ لگتا ہے۔ جائے وقوع سے 4افراد کو حراست میں لیا گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق عزیز آباد میں واقع ایک مکان میں 30 سالہ ثاقب جمال نے وسیم نامی شخص کو 4 گولیاں ماریں اور پھر اپنے ہی گھر والوں کو یرغمال بنالیا۔

واقعے کی اطلاع ملنے پر پولیس پہنچی تو ثاقب نے فائرنگ شروع کر دی، جس سے ایک اہلکار زخمی ہوا۔علاقہ مکینوں کا کہنا ہے کہ ثاقب کے ہاتھوں ہلاک وسیم عرف بابو چچا انتہائی شریف آدمی تھا۔ایس پی گلبرگ بشیر بروہی کے مطابق ملزم ثاقب جمال سوفٹ وئیر انجینئر تھا، لیکن جس طرح اس نے پولیس سے مقابلہ کیا اس لگتا ہے کہ وہ تربیت یافتہ تھا۔

(جاری ہے)

ثاقب کے اہل خانہ کے مطابق وسیم ان کی فیکٹری کا سابق ملازم ہے۔

وہ اکثر اسے پیسے دے دیا کرتے تھے لیکن آج وسیم چھری لے کر آیا اور پیسے مانگنے لگا۔ڈی آئی جی ذوالفقار علی لاڑک کے مطابق واقعے کے بعد پولیس کی بھاری نفری جائے وقوع پر پہنچی اور اس نے گھر کو گھیرے میں لے لیا، پولیس کے مطابق 15 پر اطلاع موصول ہوئی تھی، جس پر پولیس کی نفری پہنچی تو گھر کے اندر سے فائرنگ کی گئی، پولیس کی جوابی کارروائی پر ملزم پولیس فائرنگ سے ہلاک ہوگیا جبکہ گھر سے ایک اور شخص کی بھی لاش ملی ہے۔

گھرسے ملنے والی لاش کی شناخت وسیم اختر کے نام سے ہوئی ہے، مقتول کے بھائی کے مطابق اس کا بھائی گھر سے سودا لینے نکلا تھا اور وہاں کیسے پہنچا اسے معلوم نہیں۔ڈی آئی جی ویسٹ ذوالفقار لاڑک کے مطابق مارے جانے والے شخص نے اپنے اہلخانہ کو بھی یرغمال بنا رکھا تھا جبکہ جائے وقوع سے 4افراد کو حراست میں بھی لیا گیا ہے۔پولیس نے ہلاک ملزم کے والد کو بھی حراست میں لے لیا ہے، ابتدائی تحقیقات میں پتہ چلا ہے کہ جس شخص کی لاش ملی ہے وہ پیسے مانگنے آیا تھا، دونوں لاشوں کو اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔

متعلقہ عنوان :

کراچی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments