اُردو پوائنٹ پاکستان لاہورلاہور کی خبریںخواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق ،مطمئن کرنے میں ناکام قومی احتساب ..

خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق ،مطمئن کرنے میں ناکام

قومی احتساب بیورو نے خواجہ برادران کو دوبارہ طلب کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے

لاہور (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 16 اکتوبر 2018ء):خواجہ سعد رفیق پیشی کے دوران نیب کو مطمئن کرنے میں ناکام رہے،قومی احتساب بیورو نے خواجہ برادران کو دوبارہ طلب کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔تفصیلات کے مطابق خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق آج پیراگون ہاوسنگ سوسائٹی کیس میں نیب کے سامنے پیش ہوئے۔نیب نے خواجہ برادران سے پیراگون سوسائٹی کے حوالے سے مختلف سوالات کئیے ۔

سوالات پوچھنے کے بعد خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق کو نیب سے گھر جانے کی اجازت دے دی گئی۔تاہم تازہ ترین خبر کے مطابق خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق نیب کے سوالوں کا اطمینان بخش جواب نہیں دے سکے تھے جس کے بعد قومی احتساب بیورو نے خواجہ برادران کو دوبارہ طلب کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

(خبر جاری ہے)

اگلی پیشی میں خواجہ برادران کے حوالے سے اہم فیصلہ کیا جائے گا۔

یاد رہے کہ چئیرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال نے خواجہ برادران کے وارنٹ گرفتاری جاری کر دئیے ہیں اور دونوں کی حفاظتی ضمانت ختم ہوتے ہی انہیں گرفتار کر لیا جائے گا۔ ان کی گرفتاری پر مسلم لیگ ن نے احتساب عدالت کا گھیراؤ کرنے اور طاقت کا مظاہرہ کرنے کی منصوبہ بندی کر رکھی ہے لیکن حکومت نے بھی سخت اقدامات کے تحت رینجرز کو طلب کر کے نیب کورٹ کا حفاظتی گھیراؤ کرنے کی ہدایت کر رکھی ہے۔

واضح ہو کہ گذشتہ روز لاہور ہائیکورٹ میں جسٹس علی باقر نجفی کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق کی درخواست ضمانت پر سماعت کی۔ سماعت کے دوران خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق کی ضمانت قبل از گرفتاری منظور کر لی گئی۔ لاہور ہائیکورٹ نے نیب کو خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق کو گرفتار کرنے سے روک دیا۔ خواجہ برادران کی 24 اکتوبر تک عبوری ضمانت منظور کی گئی ۔

اپنی رائے کا اظہار کریں -

لاہور شہر کی مزید خبریں