پاکپتن،لو میرج کرنے پر لڑکی کے ورثاء نے دولہے کو قتل کرنے کی نیت سے اغواء کرلیا

زنجیروں میں جکڑ کر مویشیوں کے ساتھ باندھ کر تشدد، طلاق دینے پر دبائو، پولیس نے کاروائی کے دوران نوجوان کو بازیاب کروالیا

پیر اپریل 19:36

پاکپتن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 اپریل2018ء) لو میرج کرنے پر لڑکی کے ورثاء نے دولہے کو قتل کرنے کی نیت سے اغواء کرلیا،زنجیروں میں جکڑ کر مویشیوں کے ساتھ باندھ کر تشدد، طلاق دینے پر دبائو، پولیس تھانہ قبولہ نے کاروائی کے دوران نوجوان کو بازیاب کروالیا۔

(جاری ہے)

بتایا گیا ہے کہ نواحی قصبے قبولہ کے علاقہ فرید شاہ کے رہائشی نوجوان محمد خاں نے ڈھپئی کے علاقہ کی رہائشی خاتون امانت بی بی سے لومیرج کررکھی تھی جس پر امانت بی بی کے بھائی ذاکر نے اپنے 6 ساتھیوں کے ہمراہ محمد خاں کے گھرسے محمد خاںکو ہیلے بہانے سے اپنے ساتھ باہر لے جاکر اغواء کرلیا جس کے بعد ملزمان محمد خاں کو تھانہ شبھور کے علاقے میں لے گئے جہاں پر ملزمان نے محمد خاں کو زنجیروں میں جکڑ کرمویشیوں کے ساتھ باندھ کر تشدد کا نشانہ بنایا ا ور طلاق دینے کا مطالبہ کیا،،طلاق نہ دینے پر قتل کرنے کی دھمکیاں دیں۔

جس پر محمدخاں کی والدہ منیراں بی بی نے تھانہ قبولہ میں اپنے بیٹے کے اغواء کا مقدمہ درج کروادیا۔ پولیس تھانہ قبولہ نے انویسٹی گیشن انچارج محمد وقاص کی سربراہی میں تھانہ شبھور کے علاقہ میں چھاپہ مار کر نوجوان کو بازیاب کروالیا ۔۔پولیس ٹیم کے ریڈ پر ملزمان نے نوجوان کومویشیوں کے زنجیروں سے جکڑ کر باندھا ہوا تھا۔

متعلقہ عنوان :