بچی کی لاش پر سیاست کی گئی ہے ، ایف آئی آر کٹ جانے کے بعد مظاہرے کا جواز نہیں بنتا تھا ،سہیل انور سیال

تماشہ کرنے والوں کے خلاف ایف آئی آر کٹ چکی ہے۔ واقعے میں پولیس کا جو بھی اہلکار ملوث ہوا سخت کارروائی ہوگی،وزیر داخلہ سندھ

بدھ اپریل 16:20

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 اپریل2018ء) وزیر داخلہ سندھ سہیل انور سیال نے کہاہے کہ بچی کی لاش پر سیاست کی گئی ہے ۔ ایف آئی آر کٹ جانے کے بعد مظاہرے کا جواز نہیں بنتا تھا ۔تماشہ کرنے والوں کے خلاف ایف آئی آر کٹ چکی ہے۔ واقعے میں پولیس کا جو بھی اہلکار ملوث ہوا سخت کارروائی ہوگی۔ ڈی آئی جی ایڈمن کی سربراہی میں ایک انکوائری بنادی گئی ہے۔

بدھ کواورنگی ٹاؤن میں زیادتی کے بعد قتل ہونے والی بچی کے اہل خانہ سے تعزیت کے بعد میڈیا سے بات چیت میں سہیل انور سیال نے کہا کہ منگھوپیر میں 6سالہ بچی کا زیادتی کے بعد قتل افسوسناک واقعہ ہے لیکن بچی کی لاش پر سیاست کی گئی ہے ۔ بچی کے دادا کی ایف آئی آر پر 2 افراد کو گرفتار کرلیا گیا ہے ۔ ایف آئی آر کے بعد مظاہرے کا جواز نہیں بنتا تھا ۔

(جاری ہے)

بچی کا والد میت دھوپ میں خراب ہونے کی وجہ سے پریشان ہوتا رہا لیکن مظاہرین نے ایک نہ سنی ۔مظاہرین کو لاش کا تقدس برقرار رکھنا چاہیے تھا ۔سہیل انور سیال نے واقعہ کی جامع تحقیقات کیلئے ڈی آئی جی کی سربراہی میں انکوائری کمیٹی بنانے کی یقین دہانی کرواتے ہوئے کہا کہ تماشہ کرنے والوں کے خلاف ایف آئی آر کٹ چکی ہے۔ پولیس کا کوئی بھی اہلکار ملوث ہوا تو سخت کارروائی ہوگی جبکہ مظاہرہ کرنے والوں کیخلاف بھی ایکشن لیا جائے گا ۔

متعلقہ عنوان :