چیف جسٹس اپنی بات سنا دیتے ہیں اور دوسروں پر پابندی لگا دیتے ہیں‘

سینٹ کے انتخابات میں صرف نون لیگ اور اس کے اتحادیوں نے شفاف طریقے سے ووٹ دیا۔نواز شریف

Mian Nadeem میاں محمد ندیم پیر اپریل 11:53

چیف جسٹس اپنی بات سنا دیتے ہیں اور دوسروں پر پابندی لگا دیتے ہیں‘
اسلام آباد(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔23 اپریل۔2018ء) سابق وزیراعظم میاں نواز شریف نے کہا کہ چیف جسٹس اپنی بات سنا دیتے ہیں کوئی اور بولے تو پابندی لگا دیتے ہیں۔سابق وزیراعظم میاں نواز شریف اور ان کی بیٹی مریم نواز لندن میں اہلیہ کلثوم نواز کی عیادت کے بعد وطن واپس پہنچ گئے۔ دونوں سیاسی راہنما نیب ریفرنس کی سماعت کے لیے احتساب عدالت اسلام آباد میں پیش ہوئے۔

عدالت کے باہر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سراج الحق کی بات بہت معنی خیز ہے، امیر جماعت اسلامی نے بھی بولا کہ وزیراعلیٰ خیبر پختون خوا پرویز خٹک نے ان سے کہا تھا کہ اوپر سے حکم آیا تھا اس پر سینیٹ میں ووٹ دیئے گئے، عمران خان اپنے ارکان اسمبلی کی تو سرزنش کر رہے ہیں، وہ اپنی سرزنش بھی تو کریں کہ کس کے کہنے پر سینیٹ میں ووٹ دیئے۔

(جاری ہے)

نواز شریف نے کہا کہ کیا عمران خان قوم کو بتائیں گے کہ انہوں نے تیر کو ووٹ نہیں دیا، کیا یہ لوگ تبدیلی لائیں گے جو بے اصولی کی سیاست کر رہے ہیں، کیا چوہدری سرور کے حوالے سے بھی جواب دیں گے انہیں ووٹ کیسے ملے؟، سینٹ کے انتخابات میں صرف نون لیگ اور اس کے اتحادیوں نے شفاف طریقے سے ووٹ دیا۔۔نواز شریف نے لاہور میں پشتون تحفظ موومنٹ (پی ٹی ایم) کے جلسے کو ناکام بنانے کے لیے جلسہ گاہ میں سیوریج کا پانی چھوڑنے کے بارے میں کہا کہ منظور پشتین کے جلسے میں پانی چھوڑ دینا بہت بڑی زیادتی ہے، جلسے میں پانی چھوڑنا کہاں کا آزادی اظہار رائے ہے۔

انہوں نے کہا کہ کلثوم نواز کی طبیعت پہلے سے بہتر ،قوم سے دعاوں کی اپیل ہے ، ہم تو بس گئے اور جا کر واپس آ گئے۔دوسری جانب احتساب عدالت نے شریف خاندان کیخلاف ایون فیلڈ اور فلیگ شپ ریفرنس کی سماعت دوپہر 2بجے تک ملتوی کردی۔اسلام آبادکی احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے شریف خاندان کیخلاف نیب ریفرنسز کی سماعت کی۔سابق وزیراعظم نواز شریف،، ان کی صاحبزادی مریم نواز اور داماد کیپٹن (ر) صفدر احتساب عدالت میں پیش ہوئے۔

عدالت نے ایون فیلڈ اور فلیگ شپ ریفرنس کی سماعت دوپہر 2بجے تک جبکہ العزیزیہ ریفرنس کی سماعت کل تک ملتوی کردی۔عدالت نے ڈی جی آپریشنز نیب ظاہر شاہ کو بطور گواہ آج طلب کر رکھا ہے جبکہ جے آئی ٹی سربراہ واجد ضیاءالعزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس میں بیان قلمبند کرائیں گے۔عدالت نے ظاہر شاہ کو ایون فلیڈ اور فلیگ شپ کے حوالے سے متعلقہ دستاویزات پیش کرنے کا حکم دیا تھا-