راولپنڈی، نجی پارکنگ میں آگ لگنے سے 23رکشوں سمیت 28گاڑیاں جل کر خاکستر ہو گئیں

بدترین ٹریفک جام کے باعث ریسکیو ٹیمیں بروقت جائے حادثہ پر بھی نہ پہنچ سکیں

پیر اپریل 23:00

راولپنڈی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 30 اپریل2018ء) ڈھوک حسو بورنگ روڈ پر نجی پارکنگ میں آگ بھڑک اٹھنے سے مجموعی طور پرڈیڑھ کروڑروپے مالیت کی23رکشوں سمیت 28گاڑیاں جل کر خاکستر ہو گئیںاندرون شہر گھمبیر ٹریفک سے ناواقف نو تعینات شدہ سی ٹی او راولپنڈی مال روڈ پر ٹریفک قوانین سے آگاہی پمفلٹس تقسیم کرتے رہے جبکہ بدترین ٹریفک جام کے باعث ریسکیو ٹیمیں بروقت جائے حادثہ پر بھی نہ پہنچ سکیں جس سے 27خاندانوں کا ذریعہ معاش آگ کے شعلوں کی نذر ہو گیا ریسکیو ذرائع کے مطابق پیر کے روزڈھوک مٹکال گلی نمبر 1 میںآٹو رکشوں کی پارکنگ میں اچانک آگ بھڑک اٹھی آگ نے پارکنگ میں کھڑی 1شہزور گاڑی ،3مہران گاڑیوں اور ایک کرولا ایکس ایل آئی گاڑی کے علاوہ23 آٹو رکشوں کو اپنی لپیٹ میں لے لیاتاہم امدادی کاروائیوں سے قبل مجموعی طور پر27رکشے اور گاڑیاں جل کر تباہ ہو گئیں ریسکیو1122اور سٹی فائر سروس کی تاخیر سے آمد کے باعث مقامی افراد اپنی مدد آپ کے تحت آگ پر قابو ڈالنے کی کوشش کرتے رہے لیکن رکشوں کے پلاسٹک میٹیریل سے آگ مسلسل پھیلتی رہی اس موقع پر بعض متاثرہ رکشہ ڈرائیور اپنا روزگار چھن جانے پر بے یارو مددگار آہ و بکا کرتے رہے تاہم بعد ازاں جائے وقوعہ پر پہنچنے والی ریسکیو ٹیموں نے آگ پر قابو پایا ریسکیو ذرائع نے دعویٰ کیا کہ آگ وائرنگ شارٹ ہونے سے لگی تاہم انہوں نے بروقت کاروائی کر کے اڑھائی کروڑ روپے مالیت کا نقصان ہونے سے بچا لیا ہے ادھر پاسبان رکشہ اینڈ ٹیکسی ڈرائیور یونین کے مرکزی صدر ایوب خان نے آن لائن سے گفتگو کرتے ہوئے شارٹ سرکٹ یا کسی پارک شدہ رکشے اور گاڑی کی وائرنگ شارٹ ہونے کی نفی کرتے ہوئے کہا کہ نہ تو کھڑی گاڑی کی کبھی وائرنگ شارٹ ہوتی ہے اور نہ ہی کھلے پلاٹ میں شارٹ سرکٹ کا کوئی جواز ہے انہوں نے شبہ ظاہر کیا کہ آگ پارکنگ کے چوکیدار کی غفلت کے باعث لگی ہے انہوں نے کہا کہ ملک آصف نامی شخص کی ملکیتی نجی پارکنگ میں رکشہ کھڑا کرنے کے عوض ہر ڈرائیور900روپے ماہوار ادا کرتا ہے لیکن ان کی حفاظت اور دیکھ بھال کا کوئی انتظام نہیں ہے انہوں نے کہا کہ ریسکیو1122اور سٹی فائر بریگیڈ کو بروقت اطلاع کے باوجود ریسکیو ٹیمیں رکشے جل جانے کے بعد موقع پر پہنچیں اور تباہ شدہ رکشوں پر پانی ڈال کر کارکردگی ظاہر کرتے رہے انہوں نے کہا راجہ بازار اور گنجمنڈی سے ملحقہ ہونے کے ناطے یہاں تمام دن اوور لوڈڈ ٹرکوں کی آمدورفت رہنے سے ٹریفک بھی جام رہتا ہے انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے یونین کے راولپندی کے صدر ظلہ کان نے متاثرین کی میٹنگ بلوائی ہے اور باہمی مشاورت کے بعد پارکنگ مالک کے خلاف پولیس کو درخواست دی جائے گی انہوں نے مطالبہ کیا کہ ضلعی انتظامیہ اور پارکنگ مالک متاثرہ رکشہ ڈرائیوروں کے لئے مالی امداد کا اعلان کرے ۔