کراچی، خطرناک اجرتی قاتل گرفتار، ملزم نے ڈیفنس میں معروف معالج ڈاکٹر عزیز کو بھی قتل کیا گیا، دوران تفتیش اہم انکشاف

پیر اپریل 22:45

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 30 اپریل2018ء) اے سی ایل سی کے ہاتھوں گرفتار ہونے والے اجرتی قاتل نے دوران تفتیش اہم انکشافات کیئے ہیں۔ ملزم سرکاری گاڑیاں چھیننے والے گروہ کا سرغہ بھی ہے۔تفصیلات کے مطابق کراچی کے علاقے ڈیفنس سے مقابلے کے بعد سیکیورٹی اہلکاروں کے ہاتھوں گرفتار ہونے والے ٹارگٹ کلر نے معروف معالج ڈاکٹر عزیز پر حملے اور دیگر کیسز سے متعلق اہم انکشافات کیے ہیں۔

پولیس کی حراست میں امان اللہ نے بتایا کہ ڈاکٹر عزیز کو ڈیفنس میں قتل کرنے کا ٹاسک ملا تھا، اس نے اپنے ساتھیوں کے ہمراہ ڈاکٹر عزیز پر ان کے گھر کے باہر حملہ کیا۔ٹارگٹ کلر امان اللہ نے پولیس حراست میں انکشاف کیا کہ حملے میں ڈاکڑ عزیز محفوظ رہے، البتہ ان کی سیکیورٹی پر مامور اہلکار گولیوں کی زد میں آکر ہلاک ہوگئے تھے۔

(جاری ہے)

ملزم کے مطابق ڈاکٹر عزیز کو ان کا بھائی عبد الوہاب قتل کروانا چاہتا تھا، عبد الوہاب سے ٹارگٹ کلنگ کے لیے 20 لاکھ روپے میں بات طے ہوئی تھی۔

امان اللہ نے پولیس کو بتایا کہ ڈاکٹر عزیز کے بھائی نے ٹارگٹ کلنگ کے لے تین لاکھ روپے ایڈوانس دیے تھے، پہلے حملے میں ڈاکٹر عزیز کے زندہ بچنے پر دوبارہ قتل کرنے کا ٹاسک ملا تھا۔ملزم سرکاری گاڑیاں چھیننے والیگروہ کا سرغہ بھی ہے، اس ضمن میں بھی اہم انکشافات سامنے آئے ہیں۔