یمن، ہیضے کی وبا پھیلنے کا خدشہ،

2برسوں میں 2ہزار افراد وباء سے جاں بحق عوامی آگہی مہم کے ساتھ ساتھ یمنی عوام کی خواراک اور رہائش کا انتظام ناگزیر ہے،بین الاقوامی طبی جریدہ

جمعہ مئی 18:16

صنعائ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 مئی2018ء) یمن میں ہیضے کی وبا کے پھیلنے کا خدشہ ہے،2016سے ابتک 2ہزار سے زائد افراد ہیضے سے اپنی جان گنوا بیٹھے ہیں،عوامی آگہی مہم کے ساتھ ساتھ یمنی عوام کی خواراک اور رہائش کا انتظام ضروری ہے۔

(جاری ہے)

غیر ملکی میڈیا کے مطابقبین الاقوامی طبی جریدے لانسیٹ نے رپورٹ کیا ہے کہ رواں مہینے کے دوران یمن میں موسم برسات کے شروع ہونے پر ہیضے کی وباء میں شدت پیدا ہونے کا یقینی امکان ہے۔

خانہ جنگی کے شکار ملک یمن کو انتہائی شدید ہیضے کی وباء کا سامنا ہے۔ اس وقت اندازوں کے مطابق ایک ملین سے زائد افراد کو ہیضے کے مرض کا سامنا ہے۔ سن 2016 سے شروع ہونے والی وبائ سے اب تک دو ہزار انسان اس مرض میں مبتلا رہنے کے بعد جاں بحق ہو چکے ہیں۔ سائنسدانوں اور ماہرین نے وسطِ مئی میں روزوں کے مہینے کے دوران یمن کے کئی شہروں میں عوامی آگہی کی مہم شروع کرنے کو بھی اہم قرار دیا ہے۔

متعلقہ عنوان :