چیف جسٹس نے سانحہ آرمی پبلک پر جوڈیشل کمیشن بنانے کا حکم دے دیا

بدھ مئی 23:36

چیف جسٹس نے سانحہ آرمی پبلک پر جوڈیشل کمیشن بنانے کا حکم دے دیا
پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے سانحہ آرمی پبلک اسکول کے حوالے سے جوڈیشل کمیشن بنانے کا حکم دے دیا۔ بدھ کو سپریم کورٹ پشاور رجسٹری میں سانحہ آرمی پبلک اسکول کیس کی سماعت ہوئی جس میں چیف جسٹس ثاقب نثار نے جوڈیشل کمیشن بنانے کا حکم دیا۔۔چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے حکم دیا کہ 2 ماہ کے اندر واقعے کے حوالے سے رپورٹ پیش کی جائے۔

(جاری ہے)

یاد رہے کہ 16 دسمبر 2014 کو پشاور کے آرمی پبلک اسکول پر دہشت گردوں کے حملے میں 130 سے زائد طلباء سمیت 144 افراد شہید ہوئے گئے تھے ،ْیہ پاکستان کی تاریخ کے بدترین دہشت گرد حملوں میں سے ایک تھا ،ْرواں برس 8 فروری کو پشاور ہائی کورٹ نے بھی سانحہ آرمی پبلک اسکول کی پولیس رپورٹ کو عام کرنے کا حکم دیا تھا۔سانحہ آرمی پبلک کے خلاف شہداء فورم نے پشاور ہائی کورٹ میں درخواست دائر کی تھی جس میں جوڈیشل کمیشن بنانے اور تحقیقاتی رپورٹ عام کرنے کی درخواست کی گئی تھی تاہم چیف جسٹس پشاور ہائیکورٹ نے کہا تھا کہ جوڈیشل کمیشن بنانا ہائیکورٹ کا اختیار نہیں بلکہ صوبائی حکومت کا اختیار ہے۔