پروفیسرساجد میر قائمہ کمیٹی امور کشمیر و گلگت بلتستان کے بلا مقابلہ چیئرمین منتخب

آزاد کشمیر ، مقبوضہ کشمیر اور گلگت بلتستان میںبہت سی انتظامی تبدیلیاں وقوع پذیر ہوئیں،مسئلہ کشمیر ایسے مراحل پر پہنچ چکا کہ جس کیلئے قومی سلامتی کونسل کے کئی اجلاس ہوچکے ، راجہ ظفرالحق کشمیر پاکستان کا اٹوٹ انگ ،بھارتی مظالم کو اجاگر کرنے کیلئے کمیٹی کو متحرک کردار ادا کرنا ہوگا ، سینیٹر رحمان ملک مسئلہ کشمیر انتہائی اہمیت کا حامل معاملہ ہے ،پاکستان کو اس کیلئے کئی جنگیں بھی لڑنا پڑیں،دونوں ایوان کی کمیٹیوں کو مسئلہ کشمیر کی بھرپور تشہیر کرنی چاہیے ، حل کے حوالے سے موثر حکمت عملی اختیار کرنی چاہیے،سینیٹر عبدالقیوم سینٹ کمیٹی کی سفارشات کو ہر جگہ اہمیت ملتی ہے، مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے اس کو بھر پور اجاگر کریں اور بھارتی مظالم کے خلاف اس کا مکروہ چہرہ دنیا کو عیاں کرنا ہوگا،سینیٹر لیفٹیننٹ (ر)صلاح الدین ترمذی کا اجلاس میں اظہار خیال

جمعرات مئی 23:02

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 31 مئی2018ء) سینٹ قائمہ کمیٹی برائے امور کشمیر و گلگت بلتستان کا اجلاس ہوا،جس میں سینیٹر پروفیسرساجد میر کو قائمہ کمیٹی برائے کشمیرامورو گلگت بلتستان کابلا مقابلہ متفقہ طور پر چیئرمین کمیٹی منتخب کرلیا گیا ، قائد ایوان سینٹ سینیٹر راجہ محمد ظفرالحق نے چیئرمین کمیٹی کو مبارکبا دی اور کہا کہ آزاد کشمیر ، مقبوضہ کشمیر اور گلگت بلتستان میںبہت سی انتظامی تبدیلیاں وقوع پذیر ہوئی ہیں اور مسئلہ کشمیر ایسے مرحلے پر پہنچ چکا ہے کہ جس کیلئے نیشنل سیکورٹی کونسل کے کئی بار اجلاس بھی ہوچکے ہیں اور ان کے ایجنڈے میں بھی شامل کرکے تفصیلی جائزہ لیا جارہے ، سینیٹر رحمان ملک نے کہا کہ کشمیر پاکستان کا اٹوٹ انگ ہے وہاں بھارتی مظالم کو اجاگر کرنے کیلئے اس کمیٹی کو متحرک کردار ادا کرنا ہوگا ، سینیٹر عبدالقیوم نے کہا کہ مسئلہ کشمیر انتہائی اہمیت کا حامل معاملہ ہے اور پاکستان کو اس کیلئے کئی جنگیں بھی لڑنا پڑیں،دونوں ایوان کی کمیٹیوں کو مسئلہ کشمیر کی بھرپور تشہیر کرنی چاہیے اور حل کے حوالے سے موثر حکمت عملی اختیار کرنی چاہیے،سینیٹر لیفٹیننٹ (ر)صلاح الدین ترمذی نے کہا کہ سینٹ کمیٹی کی سفارشات کو ہر جگہ اہمیت ملتی ہے، مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے اس کو بھر پور اجاگر کریں اور بھارتی مظالم کے خلاف اس کا مکروہ چہرہ دنیا کو عیاں کرنا ہوگا۔

(جاری ہے)

جمعرات کو چیئرمین کمیٹی کے انتخاب کے حوالے سے سینٹ قائمہ کمیٹی برائے امور کشمیر و گلگت بلتستان کا اجلاس پارلیمنٹ ہائوس میں منعقد ہوا ۔قائمہ کمیٹی کے اجلاس میں سینیٹرلیفٹیننٹ جنرل(ر) عبدالقیوم نے سینیٹر پروفیسرساجد میر کو بطور چیئرمین کمیٹی تجویز کیا جس کی تائید سینیٹر عبدالرحمان ملک نے کی ۔ سینیٹر پروفیسرساجد میر کو قائمہ کمیٹی برائے کشمیرامورو گلگت بلتستان کابلا مقابلہ متفقہ طور پر چیئرمین کمیٹی منتخب کرلیا گیا ۔

نو منتخب چیئرمین کمیٹی نے اراکین کمیٹی کا اعتما دکرنے پر شکریہ ادا کیا اور اراکین کمیٹی نے بھی بھر پور تعاون کی یقین دہانی کرائی ۔ رکن کمیٹی قائد ایوان سینٹ سینیٹر راجہ محمد ظفرالحق نے چیئرمین کمیٹی کو مبارکبا دی اور کہا کہ آزاد کشمیر ، مقبوضہ کشمیر اور گلگت بلتستان میںبہت سی انتظامی تبدیلیاں وقوع پذیر ہوئی ہیں اور مسئلہ کشمیر ایسے مرحلے پر پہنچ چکا ہے کہ جس کے لیے نیشنل سیکورٹی کونسل کے کئی بار اجلاس بھی ہوچکے ہیں اور ان کے ایجنڈے میں بھی شامل کرکے تفصیلی جائزہ لیا جارہے ۔

مقبوضہ کشمیر پر غیر قانونی قابض بھارتی افواج بارڈر کی مسلسل خلاف ورزی میں مصروف ہے یہ اس قائمہ کمیٹی کی ذمہ داری ہے کہ ان معاملات کو زیادہ سے زیادہ ملکی و بین الاقوامی اہم فورم پر بھر پور اجاگر کرے اس کمیٹی کی ذمہ داری دیگر پارلیمنٹ کی کمیٹیوں کی نسبت مسئلے کے حوالے سے بہت زیادہ ہے ۔ سینیٹر رحمان ملک نے کہا کہ کشمیر پاکستان کا اٹوٹ انگ ہے وہاں بھارتی مظالم کو اجاگر کرنے کیلئے اس کمیٹی کو متحرک کردار ادا کرنا ہوگا اور مقبوضہ کشمیر میں بڑھتے ہوئے بھارتی مظالم کے خلاف اقوام متحدہ سمیت دیگر اہم فورم پر بھرپور نمائندگی کرکے بھارت کا چہرہ بے نقاب کرنا ہوگا۔

سینیٹر عبدالقیوم نے کہا کہ مسئلہ کشمیر انتہائی اہمیت کا حامل معاملہ ہے اور پاکستان کو اس کیلئے کئی جنگیں بھی لڑنا پڑیں،،پارلیمنٹ کی کمیٹیوں پر کشمیر اور پاکستان کی عوام کو بہت زیاد ہ توقعات ہوتی ہیں ان پر پورا اترنے کیلئے دونوں ایوان کی کمیٹیوں کو مسئلہ کشمیر کی بھرپور تشہیر کرنی چاہیے اور حل کے حوالے سے موثر حکمت عملی اختیار کرنی چاہیے۔

سینیٹر لیفٹیننٹ (ر)صلاح الدین ترمذی نے کہا کہ سینٹ کمیٹی کی سفارشات کو ہر جگہ اہمیت ملتی ہے، مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے اس کو بھر پور اجاگر کریں اور بھارتی مظالم کے خلاف اس کا مکروہ چہرہ دنیا کو عیاں کرنا ہوگا۔ سینیٹرزانوار لعل دین ، ستارہ ایاز اور حاجی مومن خان آفریدی نے بھی نومنتخب چیئرمین کمیٹی کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے بھر پور تعاون کی یقین دہانی کروائی۔