ریحام خان نے کتاب کیلئے شہباز شریف سے پیسے لینے اور مریم نواز سے ملاقات کی تردید کر دی

ْالزامات لگانے والوں کے خلاف عدالت جاؤں گی ،ْچیف جسٹس سے معاملے کا نوٹس لینے کی بھی اپیل سمجھ سے بالاتر ہے کہ آخر پی ٹی آئی میری کتاب سے کیوں پریشان ہی ،ْانٹرویو

پیر جون 14:10

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 جون2018ء) پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کی سابق اہلیہ سماجی کارکن اور سابق صحافی ریحام خان نے اپنی کتاب لکھنے کیلئے مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف سے پیسے لینے اور ان سے یا سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز سے ملاقات کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ وہ الزامات لگانے والوں کے خلاف عدالت جائیں گی۔

ایک انٹرویومیں انہوں نے چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار سے معاملے کا نوٹس لینے کی بھی اپیل کردی۔ ریحام خان کا کہنا تھا کہ انہوں نے کتاب لکھنے کے لیے شہباز شریف سے پیسے لیے اور نہ ہی کبھی ان کی شہباز شریف یا مریم نواز سے ملاقات ہوئی ،ْالزامات لگانے والوں کے خلاف عدالت جاؤں گی۔انہوںنے کہاکہ سمجھ سے بالاتر ہے کہ آخر پی ٹی آئی میری کتاب سے کیوں پریشان ہی ریحام خان نے پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین اور اپنے سابق شوہر عمران خان پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ وہ آئین کے آرٹیکل 62 پر پورا نہیں اترتے، انہوں نے ان کے ساتھ نکاح کو چھپا کر 2 ماہ تک جھوٹ بولا۔

(جاری ہے)

ان کا کہنا تھا کہ جو نگران وزیر اعلیٰ کا نام نہیں دے سکا، وہ ملک کیا چلائے گا اپنی کتاب کی اشاعت کے حوالے سے ریحام خان نے کہا کہ ان کی کتاب سے الیکشن کو کیا خطرہ جو تاریخ بہتر لگی ،ْ اٴْس وقت کتاب منظر عام پر آجائیگی۔۔ریحام خان نے یہ بیان ایک ایسے وقت میں دیا ہے جب 2 جون کو تحریک انصاف کے مرکزی ترجمان فواد چوہدری نے ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا تھا کہ ریحام خان کی کتاب کی تصنیف و اشاعت کا سارا ڈرامہ حقیقی اپوزیشن کو گرانے کیلئے رچایا گیا۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ ریحام خان کی ملاقاتوں کے سارے ثبوت مل گئے ہیں کہ وہ کب، کہاں، کس سے اور کس کے ذریعے ملیں۔فواد چوہدری کے مطابق ریحام خان نے مریم نواز سے ملاقات کی جس کا اہتمام احسن اقبال نے کروایا، اس ملاقات کے ناقابل تردید شواہد نے ساری سازش کا پول کھول دیا ہے کہ کتاب کی تصنیف و اشاعت کا سارا تماشہ دراصل حقیقی حزب اختلاف کو گرانے کے لیے رچایا گیا تاہم احسن اقبال کی جانب سے اس الزام کی تردید کی جاچکی ہے۔