راولپنڈی، اپیلٹ کورٹ نے چوہدری نثار کو نااہل قرار دیئے جانے کیلئے دائر کی اپیل خارج

سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان 1997 کے سپریم کورٹ حملہ کیس میں ملوث ہیں لہٰذا چوہدری نثار کو نااہل قرار دیا جائے ، درخواست گزار کا موقف جس پر الیکشن ٹربیونل اپیلٹ کورٹ راولپنڈی کے جج جسٹس عبادالرحمان لودھی نے شاہد اورکزئی کی اپیل جارج کر دی اورریٹرنگ افسر کا فیصلہ برقرار رکھا

جمعہ جون 23:16

راولپنڈی، اپیلٹ کورٹ نے چوہدری نثار کو نااہل قرار  دیئے جانے کیلئے ..
راولپنڈی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 جون2018ء) الیکشن ٹربیونل اپیلٹ کورٹ راولپنڈی کے جج جسٹس عبادالرحمان لودھی نے سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان اور حلقہ این اے 60 سے پاکستان پیپلز پارٹی کے امیدوار ندیم شیخ کے کاغذات نامزدگی مسترد کرنے کی درخواست خارج کرتے ہوئے چکوال اور جہلم کے 2امیدواروں کو جواب دہی کے لئی25جون کو طلب کر لیا ہے سابق وزیر داخلہ کے خلاف شاہد اورکزئی نے دائر اپیل میں موقف اختیار کیا تھا کہ سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان 1997 کے سپریم کورٹ حملہ کیس میں ملوث ہیں لہٰذا چوہدری نثار کو نااہل قرار دیا جائے تاہم اپیلٹ کورٹ نے شاہد اورکزئی کی اپیل خارج کر دی اورریٹرنگ افسر کا فیصلہ برقرار رکھتے ہوئے چوہدری نثار علی خان کو انتخابات میںحصہ لینے کی اجازت فیصلہ کیا ادھرحلقہ این اے 60 سے ایم ایم اے کے محمد ندیم شیخ کے کاغذات نامزدگی مسترد ہونے کے خلاف اپیل بھی خارج کر دی محمد ندیم شیخ کے خلاف اپیل میں کہا گیا تھا کہ تائید کنندہ اور تجویز کنندہ حلقہ کے ووٹر نہیںاپلیٹ ٹربیونل نے ریٹرنگ افسر کا فیصلہ برقرار رکھتے ہوئے اپیل خارج کر دی اسی طرح حلقہ این اے 66 جہلم سے امیداوربلال اظہر کیانی کے خلاف دوہری شہریت کا حامل ہونے ،این اے 66 جہلم سے امیدوار چوہدری فرخ الطاف سوئی گیس کے ناہندہ ہونے اور حلقہ این اے 64 چکوال سے پی ٹی آئی کے امیدوارسا بق ضلع ناظم چکوال سرادر غلام عباس کے خلاف کاغذات نامزدگی میں زرعی زمین ظاہر نہ کرنے پر ریفرنس دائر کیا گیا جس پر ریٹرننگ افسران نے ایپلٹ ٹریبوبل کو ریفرنس بھجوادیا جب کہ ایپلٹ کورٹ نے تینوں امیدواروں کو جوابدہی کے لئے 25 جون کانوٹس جاری کرکے طلب کرلیا ہے۔