پی ٹی آئی رہنما امیر بخش بھٹو کا اپنے حلقہ انتخاب کا طوفانی دورہ، ہر جگہ تاریخی استقبال، پھولوں کی پتیاں نچھاور، 13 گاؤں کے سینکڑوں پی پی پی رہنما پی ٹی آئی میں شامل ہوگئے

اتوار جون 21:30

رتوڈیرو(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 جون2018ء) پی ٹی آئی رہنما امیر بخش بھٹو کا اپنے حلقہ انتخاب کا طوفانی دورہ، ہر جگہ تاریخی استقبال، پھولوں کی پتیاں نچھاور، 13 گاؤں کے سینکڑوں پی پی پی رہنما پی ٹی آئی میں شامل۔ تفصیلات کے مطابق پی ایس 10 رتوڈیرو پر پاکستان تحریک انصاف کے نامزد امیدوار مرکزی پارٹی رہنما امیر بخش خان بھٹو رتوڈیرو تحصیل کی یونین کاؤنسل وڈا بوسن کے مختلف گاؤں کا طوفانی دورا کیا، دورے دوران ہر جگہ امیر بخش خان بھٹو کا شاندار استقبال کرتے ہوئے پھولوں کی پتیاں نچھاور کی گئیں۔

اس موقعے پر 13 گاؤں کے معززین پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنماؤں گاؤں مکھن عمرانی کے وڈیرے گلزار احمد خان عمرانی، گاؤں صیفل بوزدار کے وڈیرے نظیر احمد خان بوزدار، گاؤں بشیر بروہی کے وڈیرے بشیر خان بروہی، گاؤں پیرل بروہی کے وڈیرے پیرل خان بروہی، گاؤں گھر پہنجا کے وڈیرے گدا حسین جونیجو، گاؤں شربت بوزدار کے وڈیرے شربت خان بوزدار، گاؤں شیر محمد بروہی کے وڈیرے شیر محمد خان بروہی، گوٹھ اسماعیل بروہی کے وڈیرے علی گل خان بروہی، گاؤں حاجی کرم اللہ بروہی کے وڈیرے ظفرالدین بروہی، گاؤں بصرالدین بروہی کے وڈیرے اکبر خان بروہی، گوٹھ سہراب حاجانو کے وڈیرے ولاری خان حاجانو، گاؤں حکیم آباد حاجانو کے وڈیرے حاجی در محمد حاجانو، گاؤں سنہڑا ماچھی کے وڈیرے قربان علی سولنگی نے اپنی اپنی برادریوں کے سینکڑوں افراد سمیت پاکستان پیپلز پارٹی کو الوداع کہہ کر پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت کا اعلان کیا۔

(جاری ہے)

اس موقعے پر مختلف مقامات پر عوامی اجتماعات کو خطاب کرتے ہوئے امیر بخش خان بھٹو نے کہا کہ گذشتہ 10 سالوں میں پی پی پی نے جو سندھ کی تباہی و بربادی کی ہے وہ عوام کے سامنے ہے، بالخصوص دیہاتوں میں زندگی کی بنیادی سہولیات میسر نہیں ہیں، تعلیم،، صحت تو اپنی جگہ مگر پینے کا صاف پانی بھی دیوانے کا خواب بنا ہوا ہے، افسران اور پیپلوں نے ترقیاتی اسکیموں کی مد میں اربوں روپے ہڑپ کرلیے ہیں، اب عوام کو موقعہ ملا ہے کہ وہ اپنے ووٹ کے ذریعے ان چوروں، لٹیروں اور سندھ دشمن پیپلوں سے انتقام لیکر عذابوں سے نجات حاصل کریں۔

اس موقعے پر ضلع لاڑکانہ کے صدر ارشاد خان جونیجو، عشرت عباس ابڑو، سید منل شاہ، محمد یونس بوسن، سرائو سکندر خان سولنگی و دیگر پارٹی رہنما اور کارکنان ان کے ہمراہ تھے۔