پیپلز پارٹی اور اس کی قیادت کو مقدمات کے ذریعے دباکر خوفزدہ نہیں کیا جاسکتا، نثار احمد کھوڑو

پارٹی پر دباؤ ڈالنے کیلئے پرانے ہتھکنڈے استعمال کیے جارہے ہیں ، قیادت سے لے کر کارکنان تک کوئی بھی دباؤ میں نہیں آئیگا، کارنر میٹنگز سے خطاب

منگل جولائی 23:45

پیپلز پارٹی اور اس کی قیادت کو مقدمات کے ذریعے دباکر خوفزدہ نہیں کیا ..
لاڑکانہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 جولائی2018ء) پاکستان پیپلز پارٹی سندھ کے صدر نثار احمد کھوڑو نے کہا ہے کہ پیپلز پارٹی اور اس کی قیادت کو مقدمات کے ذریعے دباکر خوفزدہ نہیں کیا جاسکتا۔ ایسا عمل کرکے پارٹی پر دباؤ ڈالنے کا پرانے ہتھکنڈے استعمال کیے جارہے ہیں لیکن پارٹی قیادت سے لے کر کارکنان تک کوئی بھی دباؤ میں نہیں آئے گا اور جمہوریت کا ہر صورت دفاع کیا جائے گا۔

لاڑکانہ شہر کے مختلف علاقوں میں منعقدہ کارنر میٹنگز سے خطاب کرتے ہوئے نثار احمد کھوڑو نے کہا کہ پارٹی کی قیادت پہلے بھی مقدمات سے نمٹ کر عدالتوں سے سرخرو ہوئی ہے اور اب بھی سرخرو ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ بلاول بھٹوزرداری کی سندھ اور پنجاب میں سرائیکی بیلٹ میں کامیاب انتخابی مہم کے دوروں کے بعد مخالفین بوکھلاہٹ کا شکار ہوچکے جو کہتے تھے کہ پیپلز پارٹی ختم ہوچکی انہیں بلاول بھٹو زرداری کا بھرپور استقبال جواب دے چکا ہے کہ عوام کس کے ساتھ ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ اگر مخالفین کو پیپلز پارٹی کی عوامی قوت سے خطرہ نیہں تو پیپلز پارٹی کی قیادت کو آزاد طریقے سے مہم چلانے سے کیوں روکا جا رہا ہی نثار احمد کھوڑو کا مزید کہنا تھا کہ پی ٹی آئی لوٹوں اور کرپٹ عناصر کی آماجگاہ بنی ہوئی ہے جبکہ جی ڈی اے سندھ دشمن سیاسی نوسربازوں کا ٹولہ ہے جن کی ایجنڈا صرف مگر مچھ کے آنسو بہا کر عوام کو بے وقوف بنانے اور عوام کو حق حاکمیت سے دور رکھنا ہے لیکن ان کے اصل چہرے عوام کے سامنے بے نقاب ہوچکے ہیں اور 25 جولائی پر عوام پی پی پی پی مخالف نوسربازوں کا باب بند کردے گا اور فتح پیپلز پارٹی کی ہی ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی سے بے وفائی کرنے والے ماضی میں شہید بینظیر بھٹو سے پارٹی ورکرز کو ملنے بھی نہیں دیتے تھے آج وہی پیپلز پارٹی کے خلاف بات کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جو ایک دوسرے کے منہ دیکھنے کو تیار نہیں ہوتے تھے آج بھٹو دشمنی میں جی ڈی اے کے پلیٹ فارم پر ظاہری طور پر ساتھ ہیں لیکن انتخابات میں شکست کے بعد وہ ایک دوسرے کو بھی نظر نہیں آئیں گے۔