پشاور،متاثرین قومی کمیٹی شمالی وزیرستان کا آئی ڈی پیزکوسہولیات نہ دینے اوربقایاجات ادانہ کرنے پر20دسمبرکوپشاوراوربنی گالہ کے سامنے احتجاجی دھرنے کااعلان

جمعرات دسمبر 23:27

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 13 دسمبر2018ء) متاثرین قومی کمیٹی شمالی وزیرستان نے حکومت کی جانب سے آئی ڈی پیزکوسہولیات نہ دینے اوربقایاجات ادانہ کرنے پر20دسمبرکوپشاوراوربنی گالہ کے سامنے احتجاجی دھرنے کااعلان کردیا۔پشاورپریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کمیٹی کے چیئرمین ملک غلام خان،ملک مسعودخان،ملک اصل خان،ملک میربت خان،ملک آورے خان،ملک میردرازخان،پاکستان پیپلزپارٹی کے جنرل سیکرٹری جنگریزمہمنداوردیگرعمائدین کاکہناتھاکہ ٹینٹوں میں رہائش پذیرآئی ڈی پیزسخت سردی میں کھلے اسمان تلے زندگی گزارنے پرمجبورہوگئے ہیں جبکہ کیمپوں سے باہرمقیم متاثرین کوحکومت سے نہ تومالی امدادمل رہے ہیں اورنہ ہی راشن مل رہاہے۔

ان کاکہناتھاکہ حکومت نے شین پونڑاوردیگرعلاقوں کے 244سے زیادہ متاثرہ خاندانوں کے سیمزبندکردیاگیاہے جس کی وجہ سے حکومت نے آئی ڈی پیز کے لاکھوں روپے روک لیے ہیں جس کے بعد متاثرین فاقوں پرمجبورہوگئے ہیں ان کاکہناتھاکہ بکاخیل کیمپ میں 8سوخاندانوں کی مالی امدادبھی روکاگیاہیں جس کافوری پرجاری کرنے کامطالبہ کرتے ہیں انہوں نے کہاکہ افغانستان سے واپس آنے والے تیراہ سوآئی ڈی پیزکے ساتھ سرکاری دستاویزات ہونے کے باوجودبھی ان کاسامان افغانستان بارڈرپرروکاگیاہیں حکومت ان کی کلیئرکرنے کیلئے فوری اقدامات اُٹھائیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہاکہ شمالی وزیرستان کے آئی ڈی پیزکوناقص خوراکی اشیاء دی جارہی ہیں جس کی وجہ سے آئی ڈی پیزمیں مختلف بیماریاں پھیلی ہوئی ہے راشن کی معیارکوفوری بہتربنایاجائے۔کمیٹی نے وزیراعظم،آرمی چیف،کورکمانڈر،وزیراعلیٰ کے پی،گورنرخیبرپختونخوا،ایف ڈی ایم اے اوردیگرمتعلقہ حکام سے ان کے جائزمطالبات فوری حل کرے تاکہ وطن کی خاطرقربانیاں دینے والے متاثرین کے محرومیوں کاازالہ ہوسکے بصورت دیگربیس دسمبرسے پشاوراوراسلام آبادمیں عمران خان کے گھربنی گالہ کے سامنے اپنے مطالبات منوانے تک احتجاجی دھرنادئینگے۔