خاتو ن کی بچے کو واش روم میں جنم دینے کے بعد مارنے کی کوشش

بچے کو پلاسٹک شاپر میں ڈال کر فلش کی ٹینکی میں پھینکا گیا

Khurram Aniq خُرم انیق منگل جنوری 17:23

خاتو ن کی بچے کو واش روم میں جنم دینے کے بعد مارنے کی کوشش
لاہور(اردوپوائنٹ تازہ ترین اخبار-14جنوری2020ء)    کوٹ خواجہ سعید ہسپتال میں ایک خاتون نے بچے کو واش رو م میں جنم دینے کے بعد مارنے کی کوشش کی۔ہسپتال انتظامیہ کی جانب سے بچے کو مارنے کی کوشش کو ناکام بنا دیا گیا۔لاہور کے علاقے شادباغ کی لڑکی نے خواجہ سعید ہسپتال میں بچے کو جنم دیا ۔ہسپتال کے ایم ایس ڈاکٹر علی بھٹی نے واقع کے تصدیق کر دی۔

تفصیلات کے مطابق خاتون کو ہسپتال کے عملے کی مدد سے داخل کیا گیا جس کے بعد خاتون نے بچے کو جنم دینے کے بعد مارنے ی کوشش کی۔خاتون کا نام مہوش بتایا گیا ہے جس کی عمر18 سال بتائی جا رہی ہے۔نجی ٹی وی چینل کی جاری کردہ رپورٹ کے مطابق خاتون نے بچے کو جنم دیا او رواش روم کے فلش کی ٹینکی میں پھینک کر مارنے کی کوشش کی گئی۔خاتون نے بچے کو شاپر میں بند کر کے فلش کی ٹینکی میں پھینکا ۔

(جاری ہے)

واقعے کی خبر ملتے ہی ہسپتال کے عملے کی ہوشیاری سے بچے کو فوراََ فلش سے باہر نکالا گیا اور بچے کو فوراََ ایمرجنسی وارڈ میں داخل کر دیا گیا جس کے بعد اب بچے کی حالت خطرے سے باہر ہے۔واضح رہے کہ پولیس کی جانب سے کاروائی کرتے ہوئے ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا ہے لیکن ابھی ملزمان کی گرفتاری عمل میں نہیں لائی گئی۔

یاد رہے کہ یہ واقع لاہور کے علاقے شادباغ میں پیش آیا جہاں 18 سالہ مہوش نے خواجہ ہسپتال میں بچے کو جنم دے کر اسے واش روم میں مارنے کی کوشش کی تھی لیکن ہسپتا ل حکام کی جانب سے بر وقت کاروائی کی بدولت بچے کی جان بچا لی گئی لیکن ملزم موقع سے فرا ر ہو گئی۔بچے کو واش روم میں فلش کی ٹینکی میں پھینک کر مارنے کی کوشش کی گئی جس کے بعد ہسپتال حکام کی جانب سے فوری کاروائی کرتے ہوئے بچے کو ایمرجنسی وارڈ میں داخل کیا گیا، اب بچے کی حالت خطرے سے باہر بتائی جا رہی ہے۔