Live Updates

کورونا وائرس کی صورتحال پر پارلیمانی کمیٹی کے قیام کیلئے سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی زیر صدارت ویڈیو کانفرنس کا انعقاد

وزیراعظم عمران خان، پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور مسلم لیگ (ن) کی طرف سے خواجہ محمد آصف ، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف، سینیٹر مولانا عبدالغفور حیدری، رکن قومی اسمبلی شاہدہ اختر علی، معاون خصوصی ڈاکٹر ظفر مرزا، چیئرمین این ڈی ایم اے لیفٹیننٹ جنرل محمد افضل سمیت دیگر اراکین پارلیمنٹ اور متعلقہ سرکاری اداروں کے اعلیٰ افسران کی شرکت

بدھ مارچ 17:23

کورونا وائرس کی صورتحال پر پارلیمانی کمیٹی کے قیام کیلئے سپیکر قومی ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 25 مارچ2020ء) کورونا وائرس کی صورتحال پر پارلیمانی کمیٹی کے قیام کیلئے سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی زیر صدارت ویڈیو کانفرنس بدھ کو پارلیمنٹ ہاؤس میں ہوئی جس میں ویڈیو لنک کے ذریعے وزیراعظم عمران خان، پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور مسلم لیگ (ن) کی طرف سے خواجہ محمد آصف نے شرکت کی جبکہ اجلاس میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف، سینیٹر مولانا عبدالغفور حیدری، رکن قومی اسمبلی شاہدہ اختر علی، وزیراعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر ظفر مرزا، چیئرمین این ڈی ایم اے لیفٹیننٹ جنرل محمد افضل سمیت دیگر اراکین پارلیمنٹ اور متعلقہ سرکاری اداروں کے اعلیٰ افسران نے شرکت کی۔

کانفرنس کے آغاز پر سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے تمام شرکاء کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ اس کانفرنس کا مقصد کورونا وائرس کی صورتحال سے نمٹنے کیلئے پارلیمانی کمیٹی کا قیام ہے۔

(جاری ہے)

وزیراعظم عمران خان نے کمیٹی کے ارکان کا خیرمقدم کیا اور تفصیلی طور پر کورونا وائرس کے حوالہ سے اب تک حکومت کی جانب سے اٹھائے جانے والے اقدامات کے بارے میں آگاہ کیا اور کمیٹی کو یقین دلایا کہ وہ پارلیمانی کمیٹی کی سفارشات کو نیشنل کوآرڈینیشن کمیٹی میں پیش کریں گے۔

وزیراعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر ظفر مرزا نے کورونا وائرس کے حوالے سے تمام تفصیلات سے کمیٹی کو آگاہ کیا ۔ انہوں نے کہا کہ 78 فیصد کورونا وائرس ایران سے آیا ہے، ہم نے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنے گھروں سے باہر بلا ضرورت نہ نکلیں۔ انہوں نے کہا کہ ڈاکٹروں اور طبی عملے کے تحفظ کیلئے ہر ممکن اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں۔ چیئرمین این ڈی ایم اے لیفٹیننٹ جنرل محمد افضل نے کانفرنس کے شرکاء کو بتایا کہ وفاقی حکومت نے این ڈی ایم اے کو 26 ارب روپے دینے کا فیصلہ کیا ہے، اس میں سے 5 ارب روپے ہمیں مل گئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہماری پہلی ترجیح ڈاکٹروں اور طبی عملے کو حفاظتی آلات کی فراہمی اور مریضوں کیلئے زیادہ سے زیادہ وینٹی لیٹرز کا انتظام کرنا ہے، پہلے مرحلے میں ہم 500 وینٹی لیٹرز فوری طور پر پاکستان لائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس سے نمٹنے کیلئے چینی حکومت ہماری بھرپور امداد کر رہی ہے۔ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ کورونا وائرس سے نمٹنے کیلئے تمام وسائل بروئے کار لاتے ہوئے بڑے تحمل اور بردباری کے ساتھ حکمت عملی بنانا ہو گی، شہباز شریف کا اس قومی فورم سے واک آؤٹ کا کوئی جواز نہیں بنتا تھا، انہیں اپنے فیصلے پر نظرثانی کرنی چاہئے۔

سینیٹر مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا کہ دیر آید درست آید، ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ یہ قومی سلامتی کا معاملہ ہے اس پر سیاست نہیں کرنی، ہم نے مل کر اس موذی مرض سے نجات حاصل کرنی ہے جس کیلئے مکمل یکجہتی کے ساتھ تمام تر وسائل بروئے کار لانے ہوں گے۔
کرونا وائرس کی تباہ کاریاں سے متعلق تازہ ترین معلومات