مصری ماڈل نامناسب تصاویر بنواکر سوشل میڈیا پر شیئر کرنے پر گرفتارو رہا

جمعہ دسمبر 20:11

مصری ماڈل نامناسب تصاویر بنواکر سوشل میڈیا پر شیئر کرنے پر گرفتارو ..
قاہرہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 04 دسمبر2020ء) مصری فیشن ماڈل اور انسٹاگرام پر سرگرم خاتون کو قاہرہ شہر کے باہر نامناسب تصاویر بنواکر سوشل میڈیا پر شیئر کرنے پر گرفتار کیا گیا، تاہم سوشل میڈیا پر خاتون ماڈل کی گرفتاری پر بہت زیادہ تنقید کیے جانے پر بعدازاں اسے ضمانت پر رہا کردیا گیا۔ اس ماڈل کی شناخت سلمی الشیمی کے نام سے ہوئی ہے جسے اسکے فوٹو گرافر حوسہ محمد کے ساتھ گرفتار کیا تھا۔

بتایا جاتا ہے کہ ماڈل نے قدیم فراعنہ مصر کے انداز کا لباس زیب تن کرکے قدیم مصر کے فرعونوں کے قبرستان سقارہ کے سامنے یہ فوٹو شوٹ کروایا تھا۔ایک غیر ملکی میڈیا ادارے نے جب اس حوالے سے مصری حکام سے رابطہ کیا تو انھوں نے اس کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ ایک فوٹو گرافر کو رقاصہ سلمی الشیمی کے ساتھ آثار قدیمہ کے زون میں پرائیویٹ تصاویر شوٹ کرنے پر گرفتار کیا گیا ہے۔

(جاری ہے)

انھوں نے کہا کہ اب اس فوٹو گرافر کا کیس متعلقہ عدالت کو بھجوایا جائے گا۔واضح رہے کہ سلمی الشیمی نے جیسے ہی اپنی تصاویر اور ویڈیو انسٹاگرام پر شیئر کیں، تو سوشل میڈیا یوزرز نے ان تصاویر کو غیرمناسب قرار دیا تھا۔ دوسری جانب سلمی الشیمی کا کہنا تھا کہ اسے معلوم نہیں تھا کہ قدیم آثار قدیمہ پر بلا اجازت تصاویر بنوانا ممنوع ہے۔ اس نے کہا کہ اسکا مقصد مصری ثقافت کو رسوا کرنا نہیں بلکہ سیاحت کو فروغ دینا ہے۔

متعلقہ عنوان :