پاک روس تعلقات میں بہت بڑی پیش رفت، روس نے پاکستانی چاول کی برآمد پر عائد پابندی ختم کر دی

روسی حکومت کے فیصلے کا اطلاق 11 جون سے ہوگا، پاکستان کی 4 کمپنیوں کو پاکستانی چاول روس ایکسپورٹ کرنے کی اجازت مل گئی

muhammad ali محمد علی جمعرات جون 22:18

پاک روس تعلقات میں بہت بڑی پیش رفت، روس نے پاکستانی چاول کی برآمد پر ..
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 جون2021ء) پاک روس تعلقات میں بہت بڑی پیش رفت، روس نے پاکستانی چاول کی برآمد پر عائد پابندی ختم کر دی، روسی حکومت کے فیصلے کا اطلاق 11 جون سے ہوگا، پاکستان کی 4 کمپنیوں کو پاکستانی چاول روس ایکسپورٹ کرنے کی اجازت مل گئی۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان اور روس کے تجارتی تعلقات میں بہتری کے حوالے سے اہم پیش رفت ہوئی ہے۔

روسی حکومت نے پاکستان کی وفاقی وزارت برائے نیشنل فوڈ سیکورٹی کے اقدامات کے بعد پاکستانی چاول کی امپورٹ پر عائد کی گئی پابندی ختم کر دی ہے۔ پابندی کے خاتمے کیلئے پاکستان اور روس کے درمیان مذاکرات جاری تھے، جو اب پاکستانی رائس ایکسپورٹرز کیلئے نتیجہ خیز ثابت ہوئے۔ روس نے پاکستان کی 4 کمپنیوں کو چاول روس ایکسپورٹ کرنے کی اجازت دی ہے۔

(جاری ہے)

ان میں کراچی کی 2، لاہور اور سیالکوٹ کی 1،1 کمپنی شامل ہے۔ روسی حکومت کے فیصلے کا اطلاق 11 جون 2020 سے ہو جائے گا۔ ماہرین کے مطابق اس پیش رفت کے بعد پاکستان روس کو چاول کی ایکسپورٹ کی مد میں کروڑوں سے اربوں ڈالرز کا سرمایہ کما سکتا ہے۔ دوسری جانب رائس ایکسپورٹرز ایسو سی ایشن آف پاکستان (ریپ )نے یورپی یونین کی عدالت میں پاکستان اور بھارت کے باسمتی چاول کے حقوق کے کیس سے متعلق سوشل میڈیا پر گردش کرنے والی مختلف خبروں کا نوٹس لیتے ہوئے بتایا ہے کہ یورپی یونین میں اس کیس کے معاملات پر درست پیش رفت ہورہی ہے ۔

رائس ایکسپورٹرز ایسو سی ایشن آف پاکستان ریپ اپنے تمام ممبران رائس ایکسپورٹرز اور باسمتی چاول کے تمام سپلائی چین کو یقین دہانی کرانا چاہتی ہے کہ اللہ کے فضل و کرم سے ریپ وزارت تجارت حکومت پاکستان کے تعاون سے اور بین الاقوامی شہرت کے حامل ماہرین قانون کے ہمراہ اس قانونی جنگ پر اپنی گرفت مضبوط رکھی ہوئی ہے ۔ریپ اس سلسلے میں وزارت تجارت حکومت پاکستان کا خصوصی شکریہ ادا کرتی ہے ۔

چیئرمین ریپ نے وضاحت کرتے ہوئے بتایا کہ اس کیس کی بین الاقوامی قانونی پیچیدگیوں کو مد نظر رکھتے ہوئے ایسو سی ایشن اپنے سینیئر اور تجربہ کار ممبران پر مشتمل ٹیم اور قانونی ماہرین کے مشورے کے مطابق ہی با ضابطہ طور پر جو آفیشل پریس ریلیز جاری کرے اسی کو ایسو سی ایشن کا تصدیق شدہ مئوقف سمجھا جائے۔