Live Updates

پاکستان میں کورونا وائرس کی ایک اور قسم کی موجودگی کا انکشاف

''ایپسیلون'' نامی کووڈ 19 کی ایک خطرناک قسم کا پتا لگایا گیا ہے۔ پروفیسر جاوید اکرم

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین جمعرات 21 اکتوبر 2021 13:32

پاکستان میں کورونا وائرس کی ایک اور قسم کی موجودگی کا انکشاف
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 21 اکتوبر 2021ء) : پاکستان میں کورونا وائرس کے بھارتی ویرینٹ کے بعد ایک اور ویرینٹ کی موجودگی کا انکشاف ہوا۔ تفصیلات کے مطابق عالمی وبا کورونا وائرس کی ایک اور قسم پاکستان پہنچنے میں کامیاب ہوگئی ہے۔ قومی اخبار ڈان نیوز میں شائع رپورٹ کے مطابق کورونا کی سائنسی ٹاسک فورس کے رکن پروفیسر جاوید اکرم نے بتایا کہ ہمیں یہ سمجھنے کی ضرورت ہے کہ کورونا وائرس پر قابو پا لیا گیا ہے، لیکن وائرس ختم نہیں ہوا۔

انہوں نے کورونا وائرس کے نئے ویرینٹ سے متعلق کہا کہ ''ایپسیلون'' نامی کووڈ 19 کی ایک خطرناک قسم کا پتا لگایا گیا ہے۔ یہ قسم کیلیفورنیا میں نمودار ہوئی تھی، اسی وجہ سے اسے کیلیفورنیا قسم یا B.1.429 کہا جارہا ہے جس کے بعد یہ برطانیہ اور دیگر یورپی ممالک پہنچی۔

(جاری ہے)

میڈیا رپورٹ کے مطابق اب پاکستان میں بھی اس کے کیسز سامنے آرہے ہیں اور اب تک ایپسیلون کی پانچ مختلف اقسام اور سات میٹیشنز ملی ہیں جس نے اسے زیادہ متعدی بنا دیا ہے۔

ہمیں یہ سمجھنے کی ضرورت ہے کہ وائرس پر قابو پالیا گیا ہے لیکن ختم نہیں ہوا اس لیے اس کے دوبارہ پھیلاؤ کے امکانات ہیں۔ پروفیسر جاوید اکرم نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ جین سیکوینسنگ کی مدد سے پاکستان میں 40 افراد کے اس قسم سے متاثر ہونے کی تصدیق ہوئی ہے لیکن یہ حقیقی اعداد و شمار نہیں ہیں کیوں کہ ہر مریض کی جین سیکوینسنگ نہیں کی جاتی۔ مثبت پہلو یہ ہے کہ تمام ویکسینز ایپسیلون کے خلاف مؤثر ہیں، اس لیے لوگوں کو حفاظتی ٹیکے لگانے چاہئیں اور معیاری طریقہ کار (ایس او پیز) پر عمل کرنا چاہئیے۔ واضح رہے کہ ملک بھر میں کورونا ویکسی نیشن کا عمل جاری ہے، جس کے نتیجے میں کورونا وائرس کے کیسز میں نمایاں کمی دیکھنے میں آئی ہے۔
Live کرونا کی نئی قسم اومیکرون کا پھیلاو سے متعلق تازہ ترین معلومات