نیب تحقیقات، طریقہ کار کے قواعد و ضوابط بنانے سے متعلق درخواست کی سماعت

سندھ ہائی کورٹ نے آئندہ سماعت پر فریقین سے نیب رولز سے متعلق پیش رفت رپورٹ طلب کرلی

پیر 29 نومبر 2021 16:16

نیب تحقیقات، طریقہ کار کے قواعد و ضوابط بنانے سے متعلق درخواست کی سماعت
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 29 نومبر2021ء) سندھ ہائیکورٹ نے نیب تحقیقات، طریقہ کار کے قواعد و ضوابط بنانے سے متعلق درخواست کی سماعت پر آئندہ سماعت پر فریقین سے نیب رولز سے متعلق پیش رفت رپورٹ طلب کرلی۔ ہائیکورٹ میں نیب تحقیقات، طریقہ کار کے قواعد و ضوابط بنانے سے متعلق طارق منصور ایڈوکیٹ کی درخواست پر سماعت ہوئی۔ جسٹس نعمت اللہ پھلپھوٹو نے ریمارکس دیئے کیا نیب رولز بن گئے کام شروع ہوگیا نیب پراسیکیوٹر نے موقف دیا کہ ہم نے ہیڈ کوارٹر کو خط لکھ دیا تھا۔

اتنے عرصے سے قواعد و ضوابط نہ بنانے پر عدالت برہم ہوگئی۔ جسٹس نعمت اللہ پھلپھوٹو نے ریمارکس دیئے کہ رولز نہیں بنے تو ڈرافٹ تو تیار ہوگیا ہوگا وہ پیش کریں۔ پراسیکیوٹر نیب نے موقف میں کہا کہ رولز بنانے کے لیے وزرات لااینڈ جسٹس اور دیگر کو لکھ دیا گیا ہے۔

(جاری ہے)

جسٹس نعمت اللہ پھلپھوٹو نے ریمارکس دیئے ہم ڈرافٹ دیکھنا چاہتے ہیں۔ طارق منصور ایڈوکیٹ نے موقف دیا کہ نیب اور دیگر کے ادارے ایک دوسرے پر ملبہ ڈالنے کی کوشش کررہے ہیں۔

عدالت نے آئندہ سماعت پر فریقین سے نیب رولز سے متعلق پیش رفت رپورٹ طلب کرلی۔ پراسیکیوٹر نیب نے بتایا تھا کہ سپریم کورٹ میں اٹارنی جنرل رولز پیش کرنے کی یقین دھانی کراچکے ہیں۔ طارق منصور ایڈوکیٹ نے دائر درخواست میں موقف اپنایا تھا کہ نیب نے رقم کی ریکوری سے اپنا حصہ لینے کیلیے دوہزار دو میں قوانین بنالیے لیکن تحقیقات کے رولز نہیں بنائے۔ نیب رولز بنانے میں جان بوجھ کر تاخیر کی جا رہی ہے۔ نیب برسوں سے بغیر رولز بنائے کام کر رہا ہے۔ نیب آرڈیننس شق 34 کے تحت رولز بنانا لازم ہیں۔ 20 سال سے نیب، رولز کے بغیر چل رہا ہے۔ رولز کے بغیر انکوائری اور انویسٹی گیشن نہیں ہو سکتی۔
>