لاہور،پنجاب فوڈ اتھارٹی کادائرہ کار پورے صوبے تک پھیلانے کا فیصلہ، سمری منظوری کے لیے ارسال

دسمبر 2017تک اتھارٹی پنجاب کے تمام اضلاع میں کام شروع کر دے گی خالی اسامیاں فوری پر کرنے کی ہدایت،کاروائیوں میں پولیس کی مکمل مدد دستیاب ہو گی ملاوٹ مافیا کی نشاندہی اورادارے کی کارکردگی جانچنے کے لیے وجیلنس ونگ بنایا جائے گا

جمعہ جنوری 10:31

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔20جنوری۔2017ء ) وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی ہدایت پر صحت مند پنجاب پروگرام کی کامیابی اور عوام کو صحت مند خوراک کی فراہمی کے لیے صوبہ بھر میں ملاوٹ مافیا کے خلاف کاروائیاں تیزی سے جاری ہے ۔پنجاب فوڈ اتھارٹی کی کارکردگی، ضروت اور اہمیت کو مدنظر رکھتے ہوئے فوڈ اتھارٹی کی ری سٹرکچرنگ کیسمری منظوری کے لیے کیبنٹ کمیٹی کو بھجوا دی گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب فوڈ اتھارٹی کا دائراہ کار 5اضلاع سے بڑھا کر پورے پنجاب تک پھیلانے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ پہلے مرحلے میں جون 2017تک 18اضلاع میں فوڈ اتھارٹی کے دفاتر قائم کیے جائیں گے جبکہ دسمبر 2017تک فوڈ اتھارٹی پورے صوبے میں کام کا آغاز کر دے گی۔ فوڈ اتھارٹی ہیڈ کوارٹر لاہور کو مزید مستحکم کرنے کے لیے تمام خالی اسامیوں فوری پر کی جائیں گی۔

(جاری ہے)

علاوہ ازیں توسیع منصوبے کے لیے گریڈ 1سے گریڈ 19 تک 199نئی اسامیوں کی درخواست بھی کی گئی ہے ۔سمری کی منظوری کے بعد فوڈ اتھارٹی کاروائیوں کو مزید موثر بنانے کے لیے پولیس کی مدد لی جا سکے گی ۔ فوڈ اتھارٹی اپنا ویجیلنس ونگ بنائے گی جو ملاوٹ مافیا پر نظر رکھنے کے ساتھ ادارے کے اندر موجود افسران اور عملے کی کارکردگی اور اختیارات کے جائز حد میں رہ کر استعمال کو یقینی بنائے گی

متعلقہ عنوان :

Your Thoughts and Comments