زرعی شعبے اور چھوٹے کاروباروں کو قرضے فراہم کئے جائیں: شوکت ترین کی بینکوں کو ہدایات

ضوںکی فراہمی سے ہی معیشت میں استحکام اور غربت میںکمی ممکن ہے، مشیر خزانہ اسلامک بینکاری سود سے پاک ہے اور اسلامی بینکوں کو جدت پر توجہ دینا چاہیئے،اسلامی بینکاری اس وقت 80 سے زائد ممالک میں ہے، اور اسلامی بینکاری کی ترقی کے لئے مل کر کام کرنے کی ضرورت ہی:اسلامی بینکنگ و فنانس کانفرنس سے آن لائن خطاب

منگل 30 نومبر 2021 20:32

زرعی شعبے اور چھوٹے کاروباروں کو قرضے فراہم کئے جائیں: شوکت ترین کی بینکوں کو ہدایات
کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 30 نومبر2021ء) مشیر خزانہ شوکت ترین نے کہا ہے کہ بینکوں کو ہدایات کی گئیں ہیںکہ زرعی شعبے اور چھوٹے کاروباروں کو قرضے فراہم کئے جائیں کیونکہ قرضوںکی فراہمی سے ہی معیشت میں استحکام اور غربت میںکمی ممکن ہے،وہ گزشتہ روز کراچی کے مقامی ہوٹل میںمنعقدہ اسلامی بینکنگ و فنانس کانفرنس سے آن لائن خطاب کررہے تھے ،کانفرنس سے اسٹیٹ بینک کی ڈپٹی گورنر سیما کامل اور ملائشیا کے سابق وزیر اعظم مہاتیر محمد اور دیگر نے بھی خطاب کیا ۔

(جاری ہے)

شوکت ترین کا خطاب میںمزید کہنا تھا کہ اسلامک بینکاری سود سے پاک ہے اور اسلامی بینکوں کو جدت پر توجہ دینا چاہیئے،اسلامی بینکاری اس وقت 80 سے زائد ممالک میں ہے، اور اسلامی بینکاری کی ترقی کے لئے مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے، شوکت ترین نے بتایا کہ حکومت اسلامی بینکاری کی ترقی کے لئے اقدامات اٹھارہی ہے، تا کہ زرعی شعبے اور چھوٹے کارباریوںکو قرضے فراہم کئے جاسکیں،کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی گورنر اسٹیٹ بینک سیما کامل نے کہا کہ بینکس صارفین کی ضروریات پر توجہ نہیں دیتے، ہم ایسا نظام لارہے ہیں جس میں اکاونٹ یا آئی بی این کی ضرورت نہیں ہوگی، نئے نظام میں صرف موبائل فون نمبر سے ٹرانزیکشنزکی جاسکیں گی، سیمی کامل نے کہا کہ ڈیجیٹل بینکنگ کا مقصد صرف تنخواہوں کی ادائیگی نہیں، بلکہ بینکوں کو ڈیجیٹل قرضوں کے لئے بھی کام کرنا ہے، ملائشیا کے سابق وزیر اعظم مہاتیر محمد نے آن لائن خطاب میںکہا کہ ملائشیا میںہم نے صرف معاشی ترقی پر توجہ نہیںدی ،بلکہ معاشی ترقی کے ثمرات عوام تک منتقل کئے ، معاشی ترقی کے لئے صنعتی ترقی کو بنیاد بنایا، معیشت کو زراعت سے صنعتوں میں تبدیل کیا، ہمیںصنعتی ترقی کے لئے بیرونی سرمایہ کاری کی ضرورت تھی، اس لئے بیرونی سرمایہ کاری کے لئے بہترین انفرااسٹریکچرفراہم کیا، دیانتداری سے اسلامی بینکاری پروان چڑھ سکتی ہے۔

#

کراچی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments

>