وزیر اعلیٰ پنجاب نے شہریوں کو تیز رفتاری معیاری خدمات کی فراہمی کیلئے سٹیزن فیڈبیک ماڈل کا دائرہ کار مزید بڑھانے کی منظوری دیدی،

شہریوں کو معیاری خدمات کی فراہمی، اداروں اور محکموں کے طریقہ کار میں تبدیلی کرکے پرفارمنس مینجمنٹ پر توجہ دینا ہوگی، ادارہ جاتی ڈھانچہ تشکیل دینے، بہتر مانیٹرنگ اور احتساب کے عمل کو موثر بنانے کے حوالے سے سٹیرنگ کمیٹی تشکیل دینے کی ہدایت ، سٹیزن فیڈبیک ماڈل سے بھرپور استفادہ کیلئے مانیٹرنگ کا موثر نظام وضع کیا جائے‘ وزیراعلیٰ شہبازشریف کی ہدایت

جمعرات جنوری 23:18

لاہور ( اُردو پوائنٹ اخبارتاز ترین ۔ 1جنوری 2015ء) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ عوام کو بہترین خدمات کی فراہمی ہمارا مشن ہے اور اس مقصد کی تکمیل کیلئے ہرممکن وسائل بروئے کار لائے جا رہے ہیں، شہریوں کو خدمات کی فراہمی کا عمل بہتر بنانے کیلئے سٹیزن فیڈبیک کا پروگرام شروع کیا گیا ہے، سٹیزن فیڈبیک ماڈل کے ذریعے شہریوں کو خدمات فراہم کرنے والے محکموں اور اداروں کی کارکردگی میں بہتری لائی جا سکتی ہے اور اس مقصد کیلئے سٹیزن فیڈبیک ماڈل کا دائرہ کار مزید بڑھانے اور اس پر موثر عملدرآمد کیلئے ادارہ جاتی ڈھانچہ تشکیل دینے کی اشد ضرورت ہے۔

وہ جمعرات کے روز یہاں اعلیٰ سطح کے اجلاس سے خطاب کر رہے تھے جس میں سٹیزن فیڈبیک ماڈل پر پیش رفت کا جائزہ لیا گیا۔

(جاری ہے)

اجلاس میں صوبائی وزیر ایکسائز و ٹیکسیشن میاں مجتبیٰ شجاع الرحمن، ایم پی اے رانا ثناء اللہ، ایڈیشنل چیف سیکرٹری ، انسپکٹر جنرل پولیس ، چیئرمین منصوبہ بندی و ترقیات، متعلقہ محکموں کے سیکرٹریز، کمشنرز راولپنڈی، بہاولپور،لاہور اور متعلقہ حکام نے شرکت کی جبکہ گوجرانوالہ ، ساہیوال، ملتان، فیصل آباد، سرگودھا اور ڈیرہ غازی خان کے کمشنرز اور ڈی سی اوز نے ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شرکت کی۔

چیئرمین پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ عمر سیف اور ورلڈ بینک کے نمائندے زبیر بھٹی نے سٹیزن فیڈبیک ماڈل پر پیش رفت اور اس کو مزید بہتر بنانے کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دی ۔ اجلاس کے دوران وزیراعلیٰ نے سٹیزن فیڈبیک ماڈل کا دائرہ کار مزید بڑھانے کی منظوری دیتے ہوئے ایک سٹیرنگ کمیٹی قائم کرنے کی ہدایت کی جو سٹیزن فیڈبیک ماڈل پر موثر عملدرآمد کے حوالے سے ادارہ جاتی ڈھانچہ تشکیل دینے اور مزید خدمات کو شامل کرنے کے حوالے سے سفارشات تیار کرے گی۔

وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سٹیزن فیڈبیک ماڈل اداروں کی کارکردگی میں بہتری لانے اور عوام کو بہتر خدمات کی فراہمی کیلئے سودمند ثابت ہوا ہے۔اس ماڈل کے تحت حاصل ہونے والے سٹیزن فیڈبیک کا فرانزک تجزیہ انتہائی ضروری ہے تاکہ اطلاعات کے مستند ہونے کے حوالے سے صحیح ڈیٹا اکٹھا ہوسکے۔انہوں نے کہا کہ ماڈل کے تحت شہریوں کو معیاری خدمات کی فراہمی کیلئے پرفارمنس مینجمنٹ پر توجہ دینا ہوگی۔

شہریو ں کی سہولت اور انہیں تیز رفتار سروس کی ڈلیوری کیلئے موثر اصلاحات کی جائیں۔ شہریوں کو سروس ڈلیور ی فراہم کرنے والے اداروں اور محکموں کے طریقہ کار میں تبدیلی بھی ضروری ہے تاکہ شہریوں کو بغیر کسی پریشانی کے معیاری اور تیز رفتار خدمات کی فراہمی یقینی بنائی جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ سٹیزن فیڈبیک ماڈل کی ضلع اور ڈویژن کی سطح پر باقاعدگی سے مانیٹرنگ ہونی چاہیئے۔

کمشنرز، ڈی سی اوز، آر پی اوز، ڈی پی اوز، ای ڈی اوز ہیلتھ اور ایجوکیشن سٹیزن فیڈبیک ماڈل کے حوالے سے باقاعدہ مانیٹرنگ کریں اور اس ضمن میں حاصل ہونے والے فیڈبیک پر فوری ایکشن لیں۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ سٹیرنگ کمیٹی سٹیزن فیڈبیک ماڈل کی بہتر انداز میں مانیٹرنگ اور احتساب کے عمل کو موثر بنانے کے حوالے سے بھی سفارشات مرتب کرے گی اور 7 روز کے اندر رپورٹ پیش کرے گی۔

متعلقہ عنوان :

لاہور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments