ْ بھارتی حکومت نے اپنی فورسز کو نہتے کشمیریوں پر مظالم کی کھلی چھٹی دے رکھی ہے، حریت فورم

بدھ اپریل 17:32

سرینگر ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 18 اپریل2018ء) مقبوضہ کشمیر میں میر واعظ عمر فاروق کی سربراہی میں قائم حریت فورم نے بھارتی فورسز کی طرف سے سرینگر،اسلام آباد، ترال، پلوامہ، سوپور، بارہمولہ ، گاندربل اور دیگر مقامات پر طلبہ کے خلاف طاقت کے وحشیانہ استعمال کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارتی حکومت نے اپنی فورسز کو نہتے کشمیریوں پر مظالم کی کھلی چھٹی دے رکھی ہے۔

کشمیر میڈیاسروس کے مطابق فورم کے ترجمان نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں کہا کہ قابض فورسز نے بدھ کے روز اسلام آباد میں طلبہ کے ایک امن مظاہرے پر دھاوا بول کر کئی طالبات سمیت بیسیوں طلباء زخمی کر دیے۔ انہوںنے کہا کہ طلبہ کے خلاف آنسو گیس اور پاوا شیلنگ کا بے تحاشا استعمال کیا گیا جوکھلی ریاستی دہشت گردی ہے۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہا کہ کشمیری طلبہ آبرو ریزی اور قتل کا نشانہ بننے والی کم عمر آصفہ کے اہلخانہ کو انصاف دلانے کے لیے پر امن مظاہرے کر رہے ہیں جس پر قابض فورسز انکے خلاف طاقت کا بے تحاشا استعمال کر رہی ہیںجو انتہائی قابل مذمت ہے ۔

ترجمان نے کہا کہ جبر واستبدا کے ہتھکنڈوں سے کشمیریوں کی آواز کو کسی صورت دبایا نہیں جاسکتا۔ترجمان نے شہید ایس حمید وانی کو شہادت کی 20ویں برسی پر شاندار خراج عقیدت پیش کیا۔دریں اثنا حریت رہنما مختار احمد وازہ نے اسلام آباد کے ہسپتال جاکر زخمی طالبات کی عیادت کی اور بھارتی دہشت گردی کی بھر پور مذمت کی۔