ملکی سالمیت اور قومی یکجہتی کے لئے ہر کسی کو اپنا کردار ادا کرنا ہو گا

ناصر حسین شاہ کا ’’صحافت اور قومی یکجہتی" کے موضوع پر منعقدہ سیمینار سے خطاب

جمعہ مئی 21:40

ملکی سالمیت اور قومی یکجہتی کے لئے ہر کسی کو اپنا کردار ادا کرنا ہو ..
کراچی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 مئی2018ء) صوبائی وزیر اطلاعات،، محنت وٹرانسپورٹ سید ناصر حسین شاہ نے کہا ہے کہ ملکی سالمیت کے خلاف باتیں کرنے والوں کا اخلاقی بائیکاٹ کرنا ہے، اب سنجیدہ صحافیوں کے درمیان بھی یہ بات عام ہوگئی ہے کہ ملکی یکجہتی کے خلاف باتیں نہیں کرنی چاہئیں اور ہم سب کو ذمہ دارانہ صحافتی فرائض انجام دیتے ہوئے ملک میں اچھی روایات کو اجاگر کرنے کیلئے اپنا کردار ادا کرنے کی اشد ضرورت ہے۔

جاری اعلامیہ کے مطابق یہ بات انہوں نے کراچی ایڈیٹرز کلب کے ایک سال مکمل ہونے اور عالمی آزادی صحافت کے دن کے حوالے سے "صحافت اور قومی یکجہتی" کے موضوع پرسندھ بوائز اسکائوٹ ہیڈ کوارٹر میں منعقدہ ایک سیمینار کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ صوبائی وزیر اطلاعات سید ناصر حسین شاہ نے کہا کہ سینئر صحافی جو بڑے نام ہیں اور جن کی خدمات کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہیں وہ بھی آج حقیقت پسندی سے یہ محسوس کررہے ہیں کہ ہمارے ملک میں صحافت کچھ زیادہ آزاد ہے اور صحافت کو اپنے ضابطے میں رہنا چاہئے نہ کہ ملکی سالمیت کے وہ ادارے جو کلیدی کردار رکھتے ہیں ان کے خلاف باتیں کی جائیں اور انہیں کوریج ملے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ ہمارے تمام ادارے قابل عزت اور معتبر ہیں، شخصیات بری ہو سکتی ہیں لیکن اس کے ادارے برے نہیں، سیاست بری نہیں میں یا کوئی اور سیاستدان غلط ہو سکتے ہیں لیکن جو ادارے اب بہتری اور صحیح سمت میں بڑھ رہے ہیں انہیں برا بھلا کہنا قطعی صحیح نہیں ہے اب کوئی بھی قانون سے بالاتر نہیں ہے سب کو حساب دینا ہے، ہماری افواج پاکستان کا دنیا کی بڑی فورسز میں اہم مقام ہے جو ملک خراب صورتحال میں ہیں وہاں پر ہماری فوج نے جو کردار ادا کیا وہ سب کے سامنے ہے، اسلامی ممالک میں تباہی کی صورتحال ہے لیکن ہماری فوج دنیا کی مضبوط ترین فورس ہے۔

ناصرحسین شاہ نے کہاکہ تنقید ہونی چاہئے اور ہم پر سب سے زیادہ ہوتی ہے لیکن جو تھوڑا بہت اچھا ہورہا ہے اسے بھی سراہا جانا چاہئے اور اچھائی کو اجاگر کیا جانا چاہئے۔ صوبائی وزیر نے کہا صحافیوں کو ہر ممکن سہولیات دینے کیلیے تیار ہیں انہیں انشورنس اور ڈویزنل و ضلعی سطح پر مختلف پروگرام شروع کررہے ہیں، کیمرہ مین اور فوٹوگرافرز کیلئے بھی تعاون فراہم کریں گے، اس کیلئے سینئر صحافی ا ٓگے آئیں اور کوئی لائحہ عمل تیار کریں۔

قبل ازیں کراچی میں متعین جاپان کے قونصل جنرل توشی کازو، صدر کراچی ایڈیٹرز کلب مبشر میر، جنرل سیکریٹری منظر نقوی، نائب صدر مختیار عاقل، سابق وزیر اطلاعات سینئر صحافی آغا مسعود، سینیٹر عبدالحسیب خان، کرنل مختار بٹ، حمید بھٹو، ڈاکٹر یاسمین فاروقی، کوکب اقبال نے بھی عالمی آزادی صحافت کے دن کے حوالے سے پاکستان میں صحافتی معیار پس منظر صحافیوں کو درپیش پیشہ ورانہ مسائل اور موجودہ صورتحال میں صحافتی کرادار اور اقدار کے حوالے سے ذمہ داریوں اور ملکی یکجہتی کیلیے کام کرنے قومی پالیسی و بیانیہ کی ضرورت اور ملکی یکجہتی کیلئے مشترکہ کام کرنے کی کوششوں اور مثبت رویوں کو اجاگر کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔ اس موقع پر شرکاء میں شیلڈز اور سرٹیفیکیٹس تقسیم کئے گئے۔