چیئر مین نیب کی وضاحت مسترد ،ْ مسلم لیگ (ن)کی مرکزی مجلس عاملہ کا جسٹس ریٹائرڈ اقبال کے خلاف قانونی کارروائی کا فیصلہ

مجلس عاملہ کا آئندہ الیکشن کیلئے پارلیمانی بورڈ ، الیکشن سیل کے قیام اور انتخابی منشور کی تیاری کیلئے کمیٹی بنانے پر بھی اتفاق وزیر داخلہ احسن اقبال پر حملے کی مذمت ،ْ جلد صحت یابی کیلئے دعا ،ْملکی سیاسی صورتحال، فاٹا اصلاحات نیب مقدمات پرمشاورت

جمعہ مئی 16:10

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 مئی2018ء) پاکستان مسلم لیگ (ن) کی مرکزی مجلس عاملہ نے چیئرمین نیب جسٹس (ر)جاوید اقبال کے خلاف قانونی چارہ جوئی کا فیصلہ کرتے ہوئے ایک بار پھر مطالبہ کیا ہے کہ چیئر مین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال فوری طورپر مستعفی ہو جائیں ۔ جمعہ کو پنجاب ہاؤس اسلام آباد میں مسلم لیگ (ن) کی مرکزی مجلس عاملہ کا اجلاس ہوا جس کی صدارت پارٹی کے تاحیات قائد اور سابق وزیراعظم نواز شریف نے کی، اجلاس میں پارٹی کے صدر شہباز شریف،، وزیراعظم شاہد خاقان عباسی ، وفاقی وزراء اور مجلس عاملہ کے دیگر ارکان نے شرکت کی۔

اجلاس میں وفاقی وزیرداخلہ احسن اقبال پرحملے کی مذمت کی گئی اوران کی صحت یابی کیلئے دعا بھی کرائی گئی۔ اجلاس میں ملکی سیاسی صورتحال، فاٹا اصلاحات نیب مقدمات اورچیئرمین نیب کے حوالے سے آئندہ کی سیاسی و قانونی حکمت عملی پرمشاورت کی گئی۔

(جاری ہے)

اجلاس کے دوران مسلم لیگ (ن) کی مرکزی مجلس عاملہ نے نیب کی وضاحت مسترد کرتے ہوئے چیئرمین نیب کے خلاف قانونی چارہ جوئی کا فیصلہ کیا اور مطالبہ کیا کہ چیرمین نیب فوری مستعفیٰ ہوں۔

اس موقع پر نواز شریف نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نیب کا ادارہ جانبدار اور متعصب ثابت ہوچکا ہے۔مسلم لیگ (ن) کی مرکزی مجلس عاملہ نے آئندہ الیکشن کیلئے پارلیمانی بورڈ ، الیکشن سیل کے قیام اور مسلم لیگ (ن) کے انتخابی منشور کی تیاری کیلئے کمیٹی بنانے پر بھی اتفاق کیا۔