شہباز شریف کا قومی اسمبلی کا حصہ بننے کا فیصلہ

سابق وزیراعلی پنجاب 2 صوبائی نشستیں پی پی 164 اور 165 کو خالی کر دیں گے

muhammad ali محمد علی جمعرات اگست 18:43

شہباز شریف کا قومی اسمبلی کا حصہ بننے کا فیصلہ
لاہور (اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔09 اگست 2018ء) شہباز شریف کا قومی اسمبلی کا حصہ بننے کا فیصلہ، سابق وزیراعلی پنجاب 2 صوبائی نشستیں پی پی 164 اور 165 کو خالی کر دیں گے۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان میں 25 جولائی کو ہونے والے عام انتخابات میں ملک بھر سے کئی بڑے بڑے برج الٹ گئے تھے۔ جن رہنماوں کو ملک بھر کے اہم ترین حلقوں سے شکست ہوئی ان میں مولانا فضل الرحمان، بلاول بھٹو، اسفند یار ولی، آفتاب شیر پاو اور دیگر شامل ہیں۔

جبکہ سابق وزیراعظم پنجاب اور موجودہ صدر ن لیگ شہباز شریف کو بھی کئی حلقوں سے اپ سیٹ شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ شہباز شریف ڈیرہ غازی خان اور کراچی کی نشستوں سے انتخاب ہار گئے تھے۔ تاہم اپنے آبائی شہر لاہور سے فتح حاصل کرنے میں کامیاب رہے تھے۔ سابق وزیراعلی پنجاب اور موجودہ صدر ن لیگ شہباز شریف نے لاہور کے قومی اسمبلی کے حلقے این اے 132 اور پنجاب اسمبلی کی نشستوں پی پی 164  اور پی پی 165 میں فتح حاصل کی تھی۔

(جاری ہے)

اس فتح کے بعد شہباز شریف کنفیوژن کا شکار تھے کہ آیا انہیں پنجاب اسمبلی کی نشست رکھنی چاہیئے یا قومی اسمبلی کی نشست۔ اب سابق وزیراعلی پنجاب اور موجودہ صدر ن لیگ شہباز شریف نے قومی اسمبلی کی نشست رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ سابق وزیراعلی پنجاب اور موجودہ صدر ن لیگ شہباز شریف پہلی مرتبہ قومی اسمبلی کا حصہ بنیں گے۔ شہباز شریف لاہور کے حلقہ این اے 132 کی نشست اپنے پاس رکھیں گے۔

جبکہ اسی حلقے سے ملحقہ پنجاب اسمبلی کی نشستوں پی پی 164 اور پی پی 165 کو خالی کر دیں گے۔ چونکہ مسلم لیگ ن قومی اسمبلی میں پاکستان تحریک انصاف کے بعد دوسری بڑی جماعت ہے، اس لیے شہباز شریف ہی قائد حزب اختلاف کے عہدے کیلئے سب سے فیورٹ امیدوار ہیں۔ شہباز شریف کو مشترکہ اپوزیشن کی جانب سے بھی قائد حزب اختلاف کے عہدے کیلئے مشترکہ طور پر نامزد کیا جا سکتا ہے۔