نجی کالج کے استاد کا فرسٹ ایئر کے طالبعلم پربیہمانہ تشدد

طالبعلم کے جسم کے مختلف حصوں گردن، کمر، چہرے، ہونٹ اور سینے پر شدید زخم آئے، طالبعلم مناو کے قریبی عزیز نے مقدمے کیلئے پولیس اسٹیشن گلبرگ میں درخواست دے دی

اتوار ستمبر 19:08

نجی کالج کے استاد کا فرسٹ ایئر کے طالبعلم پربیہمانہ تشدد
فیصل آباد (اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ سید ذکراللہ حسنی سے۔ 15 ستمبر2019ء) کوتوالی روڈ پر نجی کالج کے استاد نے جلاد کا روپ اپناتے ہوئے آئی سی ایس فرسٹ ایئر کے طالبعلم مناو علی (Manav Ali) پر تشدد کی انتہا کردی۔ طالبعلم کے جسم کے مختلف حصوں گردن، کمر، چہرے، ہونٹ اور سینے پر چھڑی کے زور دار وار لگنے سے جلد اکھڑ گئی اور خون رسنا شروع ہوگیا۔

استاد کے وحشیانہ تشدد پر جب طالبعلم اور ساتھی شکایت لے کر پرنسپل کے پاس پہنچے تو پرنسپل نے استاد کی حمایت کرتے ہوئے تشدد کو درست قرار دے دیا۔ میڈیکل رپورٹ میں بھی سپیریئر کالج کوتوالی روڈ میں زیرتعلیم آئی سی ایس فرسٹ ایئر کے طالبعلم ماناو علی پر اس کے استاد ساجد علی کی جانب سے وحشیانہ تشدد ثابت ہوگیا ہے۔

(جاری ہے)

طالبعلم جھنگ روڈ کا رہائشی ہے اس کے قریبی عزیز میاں اویس کا کہنا تھا کہ کالج سٹوڈنٹ پر وحشیانہ تشدد اور پرنسپل کی پشت پناہی قابل افسوس ہے۔

واقعہ کی ایف آئی آر کیلیے پولیس اسٹیشن گلبرگ میں درخواست دے دی گئی ہے۔ فی الحال پولیس نے ابتدائی رپٹ کا اندراج کرلیا ہے اور تعاون کر رہی ہے۔ دوسری جانب چھٹی کی وجہ سے استاد اور کالج انتظامیہ کا موقف عدم رابطہ نہیں لیا جاسکا۔

متعلقہ عنوان :