کورونا وائرس چمگادڑ کے سوپ اور زندہ چوہے کھانے سے پھیلنے کا انکشاف

ووہان کی مارکیٹ سے ملنے والی چمگادڑ کی ایک قسم فروٹ بیٹ ، کورونا وائرس کے پھیلنے کا سبب بنی ،رپورٹ

جمعہ جنوری 23:05

کورونا وائرس چمگادڑ کے سوپ اور زندہ چوہے کھانے سے پھیلنے کا انکشاف
بیجنگ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 24 جنوری2020ء)چینی کے صوبے ہوبئی کے شہر ووہان سے پھیلنے والے مہلک کورونا وائرس کے جنم لینے کی ایک وجہ یہ بھی بتائی جارہی ہے کہ یہ وائرس چمگادڑ کے سوپ اور زندہ چوہے کھانے سے پھیلا۔برطانوی جریدے میں شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق ووہان سے ایسی ویڈیوز اور تصاویر سامنے آئی ہیں جن میں دیکھا گیا کہ چینی شہری چمگادڑ کا سوپ اور زندہ چوہوں کا کھانا کھا رہے ہیں۔

(جاری ہے)

مذکورہ تصاویر سامنے آنے کے بعد ماہرین کا کہنا تھاکہ ووہان کی مارکیٹ سے ملنے والی چمگادڑ کی ایک قسم فروٹ بیٹ ، کورونا وائرس کے پھیلنے کا سبب بنی جو اب ایک فرد سے دوسرے فرد میں منتقل ہو رہا ہے۔ماہرین نے بتایا کہ سب سے پہلے جو افراد اس شکایت کیساتھ اسپتال پہنچے تھے ان کا تعلق مقامی ہول سیل مچھلی مارکیٹ سے تھا جہاں مرغیاں، گدھے، بھیڑیں، خنزیر، اونٹ، لومڑیاں، بیڈ جر، چوہے، کانٹوں والا چوہا، بلیوں کی ایک قسم کییوٹ، بھیڑیے اور دیگر رینگنے والے جانور دستیاب ہوتے ہیں۔