ایک اور ایئر لائن کا پاکستان میں کام شروع کرنے کا فیصلہ

کے ٹو ایئر ویز اس سال کے آخر میں اپنے کام شروع کرنے کے لئے تیار، اندرون ملک اور بین اقوامی پروازیں عمل میں لائی جائینگی

Usama Ch اسامہ چوہدری منگل جنوری 23:11

ایک اور ایئر لائن کا پاکستان میں کام شروع کرنے کا فیصلہ
کراچی (اردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین 28 جنوری 2020) : ایک اور ایئر لائن کا پاکستان میں کام شروع کرنے کا فیصلہ، کے ٹو ایئر ویز اس سال کے آخر میں اپنے کام شروع کرنے کے لئے تیار، اندرون ملک اور بین اقوامی پروازیں عمل میں لائی جائینگی۔ تفصیلات کے مطابق کے ٹو ایئر ویز اس سال کے آخر میں اپنے کام شروع کرنے کے لئے تیارہے۔ کراچی میں واقع نئی ایئر لائن چترال، اسکردو اور اسلام آباد سمیت ملک بھر میں مقامات کی خدمت کرے گی جس کے بعد میں توسیع دیے جانے کا امکان ہے کیونکہ کمپنی جلد ہی بین الاقوامی مقامات تک پروازیں کریگی۔

روسڈا کے سی ای او جولین اسٹورٹن نے معاہدے پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کی ٹیم کے ٹو ایئرویز کی کامیابی میں بڑا کردار ادا کرنے کے لئے پرجوش ہے۔

(جاری ہے)

انھوں نے کہا کہ ہم زیادہ سے زیادہ منقطع نظاموں سے دور جانے اور ایک اسٹاپ حل کو اپنانے کی خواہش کو زیادہ سے زیادہ دیکھ رہے ہیں۔ انکا مزید کہنا ہے کہ یہ خاص طور پر کے 2 ایئرویز جیسی آنے والی تنظیموں کے ساتھ سچ ہے، میں پرجوش ہوں کہ اب ہم ان کے آنے والے آغاز اور آئندہ کی ترقی میں نمایاں کردار ادا کریں گے۔

اس سے قبل پاکستان کی قومی ایئر لائن بھی سٹاک ایکسچینج کی ڈیفالٹر لسٹ سے نکل گئی تھی اور نارمل ٹریڈنگ لسٹ کا حصہ بن گئی تھی جس کا باقاعدہ نوٹیفکیشن جاری کردیا گیا تھا۔ پاکستان سٹاک ایکسچینج کے سالانہ اجلاس میں پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائن کو ڈیفالٹر لسٹ سے نکال دیا گیا تھا۔ قومی ایئرلائن کا نام 2018 سے ڈیفالٹر لسٹ میں تھا مگر جیسے ہی نئے چئیرمین پی آئی اے ارشد ملک نے چارج سنبھالا تو انھوں نے مالیاتی رپورٹس جاری کیں جس کے بعد یہ فیصلہ کیا گیا۔

یاد رہے کہ امریکا نے 19 سال تک پاکستان سے اپنے ملک کیلئے براہ راست پروازوں پر پابندی عائد کیے رکھی تھی جسے ختم کر دیا گیا تھا۔ بتایا گیا تھا کہ 2001 میں نائن الیون حملوں کے بعد امریکی حکام نے پاکستان سے امریکا کیلئے براہ راست پروازوں پر پابندی عائد کر دی تھی۔ یہ پابندی 19 سال تک برقرار رہی جو ختم کر دی گئی تھی۔ پاکستانی حکام گزشتہ 2 برسوں سے کوشش کر رہے تھے کہ امریکا کو پابندی کے خاتمے کیلئے راضی کیا جائے۔

بتایا گیا تھا کہ دونوں ممالک کے تعلقات میں بہتری آنے اور پاکستان کے حالات بہتر ہونے کے بعد بالآخر امریکی حکام نے اجازت دے دی تھی کہ اب پاکستان سے امریکا کیلئے براہ راست پروازیں چلائی جا سکتی ہیں۔ اس حوالے سے مزید بتایا گیا تھا کہ قومی ائیرلائن پی آئی اے نے امریکا کیلئے براہ راست پروازوں کا آپریشن شروع کرنے کی تیاریوں کا آغاز کر دیا تھا۔ بتایا گیا تھا کہ پی آئی اے مئی 2020 سے امریکا کیلئے براہ راست پروازوں کو آغاز کر دے گی۔ ابتدائی طور پر پی آئی اے امریکا کیلئے ہفتہ وار 3 براہ راست پروازیں چلائے گی۔ بعد ازاں پروازوں کی تعداد میں اضافہ کر دیا جائے گا۔ امریکا کیلئے براہ راست پروازیں چلانے سے پی آئی اے کو اچھا خاصا مالی فائدہ ہونا تھا۔