Live Updates

ہمارے فعال کردار کی وجہ سے حکومت کوکورونا وائرس کے خلاف اقدامات کرنے پڑے ہیں ‘ شہباز شریف

حکومت کو ان تمام اقدامات پر مجبور کریں گے جو اس وقت قوم اور ملک کی بقاوسلامتی کے لئے ضروری ہیں اپوزیشن جماعتوں کی مرتب کردہ حکمت عملی حکومت کو پیش کررہے ہیں تاکہ اس پر فی الفور عمل کیاجائے‘ اجلاس سے خطاب

بدھ مارچ 17:21

ہمارے فعال کردار کی وجہ سے حکومت کوکورونا وائرس کے خلاف اقدامات کرنے ..
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 25 مارچ2020ء) پاکستان مسلم لیگ(ن) کے صدر محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ ہمارے فعال کردار کی وجہ سے حکومت کوکورونا وائرس کے خلاف اقدامات کرنے پڑے ہیں جو اب تک خواب غفلت کا شکار تھی اور لیت ولعل سے کام لیاجارہا تھا،ہم حکومت کو ان تمام اقدامات پر مجبور کریں گے جو اس وقت قوم اور ملک کی بقاوسلامتی کے لئے ضروری ہیں،اپوزیشن جماعتوں کی مرتب کردہ حکمت عملی حکومت کو پیش کررہے ہیں تاکہ اس پر فی الفور عمل کیاجائے،ہم نے اس وقت سیاست اور سیاسی مفادات کو ترجیح نہیں دینی اور بیشک سیاسی نقصان ہوتا ہے تو ہوجائے ،اس وقت ہمارا اصل مقصد اپنی قوم کی بقاء کی جنگ ہے،اراکین اسمبلی اپنے حلقوں اور علاقوں کی صورتحال کی نشاندہی کریں جس سے ایک ڈیٹا مرتب ہوتا رہے گا تاکہ مجموعی طورپر ہمیں صورتحال کو مانیٹر کرنے میں آسانی ہو۔

(جاری ہے)

ان خیالات کا اظہارانہوں نے پارٹی کے اراکین قومی، صوبائی اسمبلی، سینیٹ اور سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی سے بذریعہ ویڈیو لنک خطاب کرتے ہوئے کیا ۔اجلاس میں راناثنااللہ خان، مشاہد اللہ خان، اویس لغاری، پرویز ملک،شیزا فاطمہ، روحیل اصغر ،ایوب خان گادھی جنید انور ،صفدر شبیر،خواجہ عمران نذیر ،سردار خالد، کرن ڈار، برجیس طاہر،سمیع اللہ خان، عظمی بخاری ،خواجہ سلمان رفیق، بلال تارڑ، رابعہ احمد، عابد رضا،میاں طاہر جمیل ،سہیل شوکت بٹ ، علی پرویزملک، شاہستہ پرویز ملک، عثمان ابراہیم ،چودھری شہباز ،رانا مبشر، چودھری فقیر، ڈاکٹر لیاقت علی خان، شاہد خان، وحید عالم، خرم دستگیر سمیت دیگر شریک ہوئے ۔

شہباز شریف نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں آپ کا شکر گزار ہوں کہ آپ سب اس مشاورت میں شامل ہوئے۔محمد نواز شریف کا کہنا ہے کہ وہ موجودہ صورتحال پر انتہائی دکھی ہیں کہ قوم کو مشکل اور ان صبرآزما حالات کا سامنا ہے، میری آپ سب سے عاجزانہ درخواست ہے نوازشریف کی صحت کاملہ کیلئے بھی خصوصی دعا فرمائیں،محمد نوازشریف کا آپ کے نام یہ بھی پیغام ہے کہ پاکستان مسلم لیگ (ن)کی قیادت، رہنما اور کارکنان مل کر ایک تاریخی کردار ادا کریں، اس کڑے وقت میں قوم اور ملک کی نگہبانی اور مفادات کے تحفظ کے لئے کاوشیں کریں،قوم کے ایک خادم، ایک رضاکار کے طورپر اپنا کردار ادا کرنا ہے، کورونا نے پوری دنیا کو ہلا کر رکھ دیا ہے، قیمتی جانوں کو ضیاع ہورہا ہے۔

سوا ارب سے زیادہ آبادی اپنے گھروں میں بند ہے،معیشت کی تباہی کورونا سے بھی بڑا خطرہ بن کر ظاہرہورہی ہے،پاکستان میں بھی کورونا کے مریضوں کی تعداد میں تیزی سے اضافہ ہورہا ہے جس پر پوری قوم پریشان اور مضطرب ہے، اس صورتحال کا تقاضہ ہے کہ ہم مکمل قومی اتحاد، یکجہتی ، اخوت اور بھائی چارے کے عظیم جذبے پر کاربند ہوں،ہم نے سیاست اور سیاسی مفادات کو اس وقت ترجیح نہیں دینی،سیاسی نقصان ہوتا ہے تو ہوجائے لیکن ہم نے اپنے اصل ہدف پر نظر رکھنی ہے،اس وقت ہمارا اصل مقصد اپنی قوم کی بقاکی جنگ ہے،آج ہم نے عوام کے خادم کا کردار ادا کرنا ہے،آج ہم نے بڑے بھائی، خیرخواہ کا کردار ادا کرنا ہے، یہ اجتماعی امتحان ہے،اس میں اجتماعی طورپر ہی ہم سرخرو ہوسکتے ہیں۔

شہباز شریف نے پارٹی اراکین کو ہدایات کی کہ آپ اپنے حلقوں اور علاقوں میں نشاندہی کریں کہ کہاں صورتحال کیا ہے،عوام کو کن مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے،متاثرین کی صورتحال کیا ہے تاکہ ہمارے پاس اس ضمن میں ایک ڈیٹا بھی مرتب ہوتا رہے تاکہ مجموعی طورپر ہمیں صورتحال کو مانیٹر کرنے میں آسانی ہو ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے یہ فیصلہ کیا ہے کہ ہمارے ارکان قومی وصوبائی اسمبلی، ارکان سینٹ، لوکل گورنمنٹ کے نمائندے اور دیگر تنظیمی عہدیداران صاحبان، ہمارے کارکنان فلاحی اور امدادی سرگرمیاں تیز کریں،موجودہ حالات کی سنگینی اور قوم کی سلامتی کو مدنظر رکھتے ہوئے اس معاملے پر ہم سیاست کو گناہ سمجھتے ہیں،ہم نے اپوزیشن کے طورپر فیصلہ کیا ہے کہ قوم کی زندگی کے معاملے پر کوئی سمجھوتہ نہ کیا جائے،سیاسی مفادات سے قطع نظر اس وقت ایک قومی کردار ادا کیا جائے اسی لئے ہم سب مل کر وہ کام کریں گے جس سے قوم کی زندگی کا اولین مقصد پورا ہو، ہم حکومت کو ان تمام اقدامات پر مجبور کریں جو اس وقت قوم اور ملک کی بقاوسلامتی کے لئے ضروری ہیں،اس وقت مسئلہ سیاست کا نہیں بلکہ قومی سلامتی اور قومی بقا ء کا ہے اسی لئے ہم میدان عمل میں اترے ہیں۔

شہباز شریف نے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ (ن)پر سب سے بھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ ہم پاکستان کی خالق جماعت کے وارث ہیں،ہم قائداعظم کے سپاہی ہیں،ہم نے اس ارض وطن کے لئے ہمیشہ اپنا تن، من، دھن لگایا ہے ہر قربانی دی ہے،انشااللہ آزمائش کی اس گھڑی میں بھی ہم کامیاب ہوں گے اور کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے۔ انہوںنے کہا کہ مجھے آپ کو یہ بتاتے ہوئے خوشی محسوس ہورہی ہے کہ پاکستان مسلم لیگ (ن)نے باہمی مشاورت، غوروخوض، مختلف ماہرین کی تجاویز اور اپنے تجربے کی روشنی میں ایک جامع قومی حکمت عملی مرتب کی تاکہ اس وقت قوم کو جس خطرناک اور مخدوش صورتحال کا سامنا ہے اس میں واضح راہ عمل متعین ہوسکے، ہم نے کورونا اور معیشت سے ہونے والی تباہی کی سونامی کے آگے بند باندھنے کے لئے ایک ٹھوس، قابل عمل اور جامع نیشنل ایکشن پلان دیدیا ہے، اس قومی حکمت عملی میں فنانشل ایمرجنسی کے نفاذ کا مطالبہ کیاگیا ہے،لاک ڈائون کی صورت میں عوام کو خوراک اور دیگر اشیائے ضروریہ پہنچانے کے لئے پروگرام مرتب کرنے کا مطالبہ کیاگیا ہے، مالی، انتظامی اور دیگر متعلقہ تمام پہلوئوں کے حوالے سے سفارشات دی گئی ہیں۔

انہوںنے کہا کہ اللہ تعالی کا شکر ہے کہ اپوزیشن کی تمام جماعتوں کی قیادت سے جومشاورت ہوئی، اس میں پاکستان مسلم لیگ (ن)کی تیار کردہ قومی حکمت عملی کی مکمل تائید کرتے ہوئے اسے منظور کرلیاگیا، بجا طورپر ہم یہ کہہ سکتے ہیں کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کے فعال کردار کی وجہ سے حکومت کو اقدامات کرنے پڑے ہیں جو اب تک خواب غفلت کا شکار تھی اور لیت ولعل سے کام لیاجارہا تھا۔ قومی حکمت عملی اب پوری اپوزیشن کی حکمت عملی ہے جسے ہم حکومت کو پیش کررہے ہیں کہ اس پر فی الفور عمل کیاجائے۔
کرونا وائرس کی تباہ کاریاں سے متعلق تازہ ترین معلومات