پاکستان اسٹاک ایکس چینج،کے ایس ای100انڈیکس 353.26فیصد اضافے سے 42188.11پوائنٹس کی سطح پربند

جمعرات ستمبر 21:55

پاکستان اسٹاک ایکس چینج،کے ایس ای100انڈیکس 353.26فیصد اضافے سے 42188.11پوائنٹس ..
کراچی۔3 ستمبر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 03 ستمبر2020ء) پاکستان اسٹاک ایکسچینج میںجمعرات کو کاروبار حصص 8ماہ کی بلند ترین سطح پر دیکھا گیا جبکہ کاروباری حجم ساڑھی15سال کی بلند سطح پر رہا ، سرمایہ کاروں کی جانب سے نئی سرمایہ کاری میں بھرپور دلچسپی کے باعث کے ایس ای100انڈیکس42ہزار کی نفسیاتی حد کو عبور کرتے ہوئے مزید353.26پوائنٹس کے اضافے سے 42188.11پوائنٹس کی سطح پر پہنچ گیاجبکہ73.34فیصد کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا جسکے نتیجے میںمارکیٹ کے سرمایے میں 80ارب 10کروڑ47لاکھ روپے کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا جبکہ حصص کی لین دین کے لحاظ سے کاروباری حجم بھی بدھ کی نسبت 9.85فیصد زائد رہا ۔

اسٹاک ایکسچینج کی معروف ممبر کمپنی عارف حبیب لمیٹڈ کے ذرائع نے ’’اے پی پی‘‘ سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی حکومت اور وزیراعظم عمران خان نے مارکیٹ کی بہتری کے لئے بہت اچھے اقدامات کئے ہیں جس کی وجہ سے کاروبار حصص میں دن بدن بہتری آرہی ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے نہ صرف کنسٹرکشن کا تاریخی پیکیچ دیا بلکہ اسے انڈسٹری کا بھی درجہ دیا، اسی طرح مرکزی حکومت کی ہدایت کی روشنی میں بینک دولت پاکستان نے انٹریسٹ کو بتدریج کم کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ انہی اقدامات کی وجہ سے پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں حصص کے کاروبار پر مثبت اثر پڑا جس کی وجہ سے مارکیٹ مزید بہتری کی جانب گامزن ہے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ مارکیٹ میں سرمایہ کاری میں بھی اضافہ دیکھا جارہا ہے اور توقع کی جاسکتی ہے کہ آنے والے دنوں میں کے ایس ای 100 انڈیکس میں مزید اضافہ ہوگا۔ پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں جمعرات کو کاروبار کے آغاز سے ہی سرمایہ کاروں کی جانب سے منافع بخش کمپنیوں کے شیئرز کی خریداری یکھنے میں آئی جس کے باعث گزشتہ کئی روز سے جاری تیزی کا رجحان برقرار رہا اور نڈیکس دوران ٹریڈنگ 42212پوائنٹس کی بلند سطح پرپہنچ گیا۔

بعدازاں42200پوائنٹس کی نفسیاتی حد برقرار نہ رہ سکی لیکن تیزی غالب رہی اورکاروبار کے اختتام پر کے ایس ای100انڈیکس 353.26فیصد اضافے سے 42188.11پوائنٹس کی سطح پربند ہوا ۔ کے ایس ای30انڈیکس93.77پوائنٹس کے اضافے سی18031.79پوائنٹس، کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس303.31پوائنٹس کے اضافے سی29780.50پوائنٹس،کے ایم آئی30انڈیکس701.95پوائنٹس پر بند ہوا۔ گزشتہ روز439کمپنیوں کے حصص کا کاروبار ہوا جن میں322کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ ہوااور97میں کمی ہوئی اور20 کے بھائومیں استحکام رہا۔

کاروبار میںتیزی کے باعث مارکیٹ کا مجموعی سرمایہ 80ارب 10کروڑ47لاکھ31ہزار774 روپے بڑھ کر78کھرب65ارب 6کروڑ41لاکھ39ہزار657 روپے ہوگیا۔کاروباری سرگرمیوں کے اعتبار سے یونٹی فوڈز لمٹیڈ،بینک آف پنجاب،کے الیکٹرک لمٹیڈ،میپل لیف،حیسکول پیٹرول،پاور سیمنٹ، پاک انٹرنیشنل بلک،فوجی فوڈز لمٹیڈ،پاک الیکٹران اور لوٹے کیمیکل شامل ہیں۔حصص کی قیمتوں میں اتار چڑھاو،ْ کے لحاظ سے یونی لیور فوڈز کے دام846روپے کے اضافے سی12133روپے اورفلپ موریس کی قیمت 73.89روپی کے اضافی1775روپے ہوگئی جبکہ نمایاں کمی پریمیئر شوگراوراسماعیل انڈسٹریز کے داموں میں رہی جنکے بھائو 26.93روپے اور 25.68روپے کی کمی سے بالترتیب572.00 روپے اور339.01 روپے رہ گئے۔