متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے درمیان ہفتہ وار 28 کمرشل پروازچلانے کا اعلان ہو گیا

زیادہ پروازوں کے باعث اسرائیل سے بڑی تعداد میں یہودی سیاح اور سرمایہ کار امارات آئیں گے

Muhammad Irfan محمد عرفان پیر اکتوبر 15:46

متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے درمیان ہفتہ وار 28 کمرشل پروازچلانے ..
دُبئی (اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔19اکتوبر2020ء ) متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے درمیان امن معاہدے کے بعد دونوں ممالک کے درمیان کئی شعبوں میں تعاون شروع ہو چکا ہے۔ دونوں جانب سے کئی ممتاز صنعتکاروں نے بھی آپسی معاہدے کیے ہیں۔ا س کے علاوہ سیاحت، تفریح اور طب کے میدانوں میں بھی معاہدے کیے جا رہے ہیں۔ اب اسرائیل اور امارات منگل کو ایک معاہدے پر دستخط کریں گے جس کے تحت اسرائیل کے بین گوریان ہوائی اڈے سے دبئی اور ابوظبی کے درمیان ہر ہفتے 28 کمرشل پروازیں چلائی جائیں گی جس کے باعث اسرائیلی سیاحوں کی بڑی گنتی امارات آ سکے گی۔

معاہدے کے تحت اسرائیل کے ایک چھوٹے ہوائی اڈے پر لامحدود تعداد میں چارٹر پروازوں کی اجازت ہو گی اور ہر ہفتے 10 کارگو پروازیں چلائیں جائیں گی۔

(جاری ہے)

اسرائیلی وزارت نقل وحمل نے بتایا کہ ہوابازی کے معاہدے پر بین گوریون ہوائی اڈے پر دستخط ہوں گے اور پروازوں کا آغاز چند ہفتوں کے اندر ہونے کا امکان ہے۔اسرائیلی فضائی کمپنی نے اسرائیل نے گذشتہ ستمبر کے اوائل میں کہا تھا کہ اس نے تل ابیب سے امارات جانے والی پروازوں کو چلانے کے لیے فلائٹ کے شیڈول تیار کر لیا ہے۔

کمپنی کا کہنا تھا کہ دونوں ملکوں کے درمیان سیاحت کے فروغ کے امکانات کے پیش نظر فلائٹ آپریشن کو موثر اور فعال بنایا جائے گا۔کمپنی کی ایک ترجمان نے بتایا کہ سول ایوی ایشن حکام سے پروازیں چلانے کے لیے اجازت کی درخواست کی تھی اور منظوری جاری ہونے تک تل ابیب کے بین گوریون ہوائی اڈے پر ٹیک آف اور لینڈنگ کے لیے فلائٹ شیڈول تیار کیا جا رہا ہے۔