وزیراعظم نے بارڈر مینجمنٹ سسٹم کیلئےخصوصی ڈویژن بنانےکی ہدایت کردی

حکومت آزادلیکن محفوظ بارڈرزپریقین رکھتی ہے، اسمگلنگ کی روک تھام سےملکی معیشت کو ایک سال میں اربوں روپےکافائدہ ہوا، وزیراعظم عمران خان

Shehryar Abbasi شہریار عباسی پیر نومبر 21:20

وزیراعظم  نے بارڈر مینجمنٹ سسٹم کیلئےخصوصی ڈویژن بنانےکی ہدایت کردی
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین ۔ 30 نومبر 2020ء) وزیراعظم عمران خان نے بارڈر مینجمنٹ سسٹم کیلئےخصوصی ڈویژن بنانےکی ہدایت کردی ہے ۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت بارڈرمینجمنٹ سسٹم کومزیدبہتربنانےسےمتعلق اجلاس ہوا۔ اجلاس میں وفاقی وزرا اور معاون خصوصی معیدیوسف سمیت عسکری و سویلین حکام نے شرکت کی ۔ وزیراعظم کو اس موقع پر بارڈر منیجمنٹ سسٹم سے متعلق بریفنگ دی گئی ۔

بریفنگ میں بتایا گیا کہ 10مختلف وفاقی وزارتیں اور صوبائی حکومتیں بارڈر منیجمنٹ سسٹم سے وابستہ ہیں ۔ اجلاس کومختلف بارڈرکراسنگ پرنصب نظام اوربارڈرفنسنگ پرکام کی پیشرفت سےبھی آگا ہ کیاگیا وزیراعظم کو بتایا گیا کہ زمینی،ہوائی اوربحری راستوں سےداخل ہونےوالےافرادکی تفصیلات ایک جگہ اکٹھاکرنےکی ضرورت ہے جبکہ وفاقی سطح پر بارڈر کے معاملات کودیکھنےکیلئےکوئی مرکزی ادارہ موجودنہیں ہے ۔

(جاری ہے)

جس پر وزیراعظم عمران خان نے وزارت داخلہ میں ایڈیشنل سیکریٹری کی زیرصدارت بارڈرمینجمنٹ سسٹم کیلئےخصوصی ڈویژن بنانےکی ہدایت کردی ۔وزیراعظم نے کہا کہ اسمگلنگ کی روک تھام سےملکی معیشت کوایک سال کےدورانیےمیں اربوں روپےکافائدہ ہواہے ۔ حکومت آزادلیکن محفوظ بارڈرزپریقین رکھتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اورافغانستان کےدرمیان تجارت کےفروغ کیلئےعملی اقدامات اٹھائےجائیں گے ۔

اجلاس میں وزیراعظم نے بارڈر منیجمنٹ سسٹم کے لیے خصوصی ڈویژن بنانے کے ساتھ ساتھ تمام متعلقہ اداروں کوبروقت انفارمیشن،ڈیٹاشیئرنگ کی بھی ہدایت کی ہے ۔