آل راؤنڈر شکیب الحسن پر تین میچز کی پابندی اور پانچ لاکھ روپے جرمانہ

کھلاڑی نے امپائر پر غصہ ہو کر خلاف قانون وکٹیں گرا دی تھیں

Sajjad Qadir سجاد قادر اتوار جون 08:15

آل راؤنڈر شکیب الحسن پر تین میچز کی پابندی اور پانچ لاکھ روپے جرمانہ
ڈھاکہ (اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔13 جون2021ء)  ”آبیل مجھے مار“ کے مصداق بنگلہ دیش کے معروف آل راؤنڈر شکیب الحسن پر تین میچز کی پابندی کے ساتھ پانچ لاکھ روپے جرمانہ عائد کردیا گیا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق ڈھاکا میں جاری بنگلہ دیش ڈویژن پریمیئر لیگ میں محمڈن اسپورٹس کلب کے کپتان شکیب الحسن نے ابایانی لمیٹڈ کے خلاف میچ میں اپیل رد کرنے پر امپائر کے سامنے لگی وکٹوں کو ٹھوکر مار کراپنی ناراضی کا اظہار کیا تھا۔

اس میچ میں شکیب الحسن نے دوسری باربھی ڈسپلن کی دھجیاں اس وقت اڑائیں جب کم روشنی کی وجہ سے امپائر نے کھیل روک کر کور بلانے کا اشارہ کیا۔ اس موقع پر بھاگتے ہوئے شکیب الحسن نے تینوں وکٹ زمین سے اکھاڑ کر پٹخ دیں تھیں۔شکیب الحسن نے مخالف ٹیم کے کوچ خالد محمد جو بنگلہ دیش بورڈ کے ڈائریکٹر بھی ہیں سے بھی تلخ جملوں کے تبادلہ کیا تھا۔

(جاری ہے)

میچ کے اختتام پر انہوں نے سوشل میڈیا پر اپنی غلطی کا اعتراف کرتے ہوئے معافی بھی مانگی۔

لیگ انتظامیہ نے میچ ریفری کی رپورٹ پر شکیب الحسن کے خلاف ایکشن لیتے ہوئے تین میچز کی پابندی لگانے کے ساتھ پانچ لاکھ جرمانہ بھی عائد کیا جسے شکیب الحسن نے قبول کرلیا۔شکیب کو اس رویے کی وجہ سے کرکٹ حلقوں شائقین کی جانب سے شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔تاہم یاد رہے کہ بعدازاں مایہ ناز آل راؤنڈر نے فیس بک پوسٹ کے ذریعے شائقین سے اپنے رویے کی معافی مانگ لی تھی۔

واضح رہے کہ ون ڈے کرکٹ کے سرفہرست آل راؤنڈر نے اکتوبر 2019 میں آئی سی سی کے اینٹی کرپشن قوانین کی خلاف ورزی کی تھی اور کرپٹ عناصر کی جانب سے رابطہ کیے جانے کے باوجود رپورٹ نہیں کیا تھا۔قوانین کی خلاف ورزی پر ان پر 2 سال کی پابندی عائد کی گئی تھی جس میں سے ایک سال کی سزا ختم کرتے ہوئے بقیہ ایک سال کے لیے کھیل سے معطل کردیا گیا تھا۔ایک سال کی پابندی کے خاتمے کے بعد شکیب الحسن نے کرکٹ میں شاندار انداز میں واپسی کرتے ہوئے اپنی ٹیم کو فتوحات سے ہمکنار کرایا۔