سعودی عرب ؛ قومی دن کی تقریب میں خاتون کو جنسی طور پر ہراساں کرنے والا ملزم گرفتار

متاثرہ لڑکی روایتی لمبے ڈھیلے ڈھالے لباس عبایا میں ملبوس تھی کہ اس دوران مشتبہ ملزم خاتون کو چھو کر جلدی سے وہاں سے بھاگ گیا

Sajid Ali ساجد علی پیر 27 ستمبر 2021 11:00

سعودی عرب ؛ قومی دن کی تقریب میں خاتون کو جنسی طور پر ہراساں کرنے والا ..
ریاض ( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین ۔ 27 ستمبر 2021ء ) سعودی عرب میں مملکت کے قومی دن کی تقریب میں خاتون کو جنسی طور پر ہراساں کرنے والے ملزم کو گرفتار کرلیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق سعودی عرب کے شہر طائف میں حکام کی جانب سے ایک شخص کو عوامی پارک میں سعودیہ کے قومی دن کی تقریب کے دوران خاتون کو جنسی طور پر ہراساں کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے۔

سعودی میڈیا کے مطابق یہ واقعہ سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ایک ویڈیو کے ذریعے سامنے آیا ، جس میں دیکھا جاسکتا ہے کہ متاثرہ لڑکی روایتی لمبے ڈھیلے ڈھالے لباس عبایا میں ملبوس تھی کہ اس دوران مشتبہ ملزم خاتون کو چھو کر جلدی سے وہاں سے بھاگ گیا۔ بتایا گیا ہے کہ اس مشتبہ شخص کی عمر 20 سال سے زیادہ ہے جو کہ سعودی عرب کا شہری ہے ، مشتبہ شخص اب حکام کی تحویل میں ہے ، جس کوابتدائی قانونی کارروائی کے بعد پبلک پراسیکیوشن کے حوالے کردیا گیا۔

(جاری ہے)

دوسری طرف متحدہ عرب امارات کی ریاست عجمان میں 2 ایشیائی باشندوں نے 8 سالہ عرب بچے کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا ، فوجداری عدالت نے گروسری اسٹور پر بچے کے ساتھ جنسی زیادتی کے الزام میں 20 اور 31 سال کی عمر کے غیر ملکیوں کو 6 ماہ قید اور ملک بدری کی سزا سنادی، پولیس کی تفتیش سے معلوم ہوا کہ متاثرہ بچے کے والد نے 20 مئی کو ایک پولیس اسٹیشن میں شکایت درج کروائی کہ جہاں وہ رائش پذیر ہیں اسی عمارت کے نیچے واقع گروسری اسٹور سے ان کا بیٹا ڈبل روٹی خریدنے گیا لیکن واپس نہیں آیا جس پر اس کے والد نے بڑے بیٹے کو اپنے چھوٹے بھائی کی تلاش کے لیے بھیجا۔

اس دوران جب بڑے بیٹے نے اپنے بھائی کو ڈھونڈ لیا تو اس نے حملے کا ذکر کرتے ہوئے اپنے بھائی کو بتایا کہ گروسری اسٹور کے مینیجر نے ایک اور شخص کے ساتھ مل کر اسے پکڑ کر جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا اور ایک فون کے ذریعے اس بد فعلی کی ویڈیو بھی ریکارڈ کی ، والد کی شکایت پر پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے ملزمان کو گرفتار کیا اور تفتیش میں جرم ثابت ہونے کے ملزمان کو 6 ماہ قید کی سزا سنادی گئی جب کہ دونوں ایشیائی باشندوں کو جیل کی سزا پوری کرنے کے بعد ملک بدر بھی کر دیا جائے گا۔