پب جی پر دوستی کرنے والی کراچی کی لڑکی لاہور میں ایک ہفتے کے دوران متعدد مرتبہ مبینہ زیادتی کا نشانہ بنا دی گئی

متاثرہ لڑکی کو پہلے دوست نے شادی کا جھانسہ دے کر ہوٹل میں زیادتی کا نشانہ بنایا، ہوٹل سے فرار ہونے کے بعد 2 ملزمان نے نوکری کا جھانسہ دے کر زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا

muhammad ali محمد علی پیر 29 نومبر 2021 22:40

پب جی پر دوستی کرنے والی کراچی کی لڑکی لاہور میں ایک ہفتے کے دوران متعدد ..
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 29 نومبر2021ء) پب جی پر دوستی کرنے والی کراچی کی لڑکی لاہور میں ایک ہفتے کے دوران متعدد مرتبہ مبینہ زیادتی کا نشانہ بنا دی گئی، متاثرہ لڑکی کو پہلے دوست نے شادی کا جھانسہ دے کر ہوٹل میں زیادتی کا نشانہ بنایا، ہوٹل سے فرار ہونے کے بعد 2 ملزمان نے نوکری کا جھانسہ دے کر زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ تفصیلات کے مطابق دوست سے شادی کیلئے کراچی سے لاہور آنے والی لڑکی کو مبینہ جنسی درندگی کا نشانہ بنائے جانے کا انکشاف ہوا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق کراچی کی ایک لڑکی کو لاہور آنے کے بعد ایک ہفتے کے دوران کئی مرتبہ مبینہ زیادتی کا نشانہ بنایا گیا۔ متاثرہ لڑکی کی جانب سے درج کروائی گئی شکایت میں بتایا گیا کہ وہ کراچی شہر کی رہائشی ہے اور آن لائن گیم پب جی کھیلتے ہوئے لاہور کے ایک لڑکے سے دوستی ہو گئی۔

(جاری ہے)

بعد ازاں اس لڑکے نے شادی کرنے کی پیش کش کرتے ہوئے لاہور آنے کا کہا جس پر میں 23 نومبر کو بذریعہ ریلوے لاہور پہنچی۔

لاہور پہنچنے کے بعد پب جی کے ذریعے دوست بننے والا لڑکا مجھے ریلوے اسٹیشن سے ایک ہوٹل میں لے گیا اور وہاں 3 دن تک رکھا۔ لڑکی کے بیان کے مطابق اسے ہوٹل میں 3 دن تک زیادتی کا نشانہ بنایا جاتا رہا۔ بعد ازاں ملزم متاثرہ لڑکی کو ہوٹل میں چھوڑ کر فرار ہو گیا جس کے بعد لڑکی کراچی واپس جانے کیلئے ریلوے اسٹیشن پہنچی۔ متاثرہ لڑکی نے بتایا کہ جب وہ اسٹیشن پر ٹرین کا انتظار کر رہی تھیں تو وہاں 2 افراد نے اسے نوکری دلوانے کا جھانسہ دیا اور ساتھ لے گئے۔

دونوں مشتبہ افراد متاثرہ لڑکی کو لاہور کے علاقے سرور روڈ پر واقع ایک گھر میں لے گئے جہاں اسے کئی مرتبہ زیادتی کا نشانہ بنایا گیا، بعد ازاں وہ اس گھر سے فرار ہونے میں کامیاب ہو گئی۔ اس حوالے سے پولیس کا کہنا ہے کہ خاتون کے ساتھ جنسی زیادتی کی ایف آئی آر 28 نومبر کو نارتھ کینٹ پولیس اسٹیشن میں درج کی گئی اور اب کیس کی تحقیقات جاری ہیں۔ جبکہ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے رپورٹ طلب کر لی، حکام کو ملزمان کو جلد از جلد گرفتار کرنے کی ہدایت کی اور متاثرہ خاتون کو انصاف کی یقین دہانی بھی کرائی ہے۔