ماہانہ ایکسپورٹس ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئیں

نومبر کے ماہ میں پاکستان نے ایکسپورٹس کی مد میں تقریبا 3 ارب ڈالرز کما لیے

muhammad ali محمد علی بدھ 1 دسمبر 2021 22:46

ماہانہ ایکسپورٹس ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئیں
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 دسمبر2021ء) ماہانہ ایکسپورٹس ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئیں، نومبر کے ماہ میں پاکستان نے ایکسپورٹس کی مد میں تقریبا 3 ارب ڈالرز کما لیے۔ تفصیلات کے مطابق پاکستانی برآمدات ملکی تاریخ میں پہلی بار ایک ماہ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئیں،نومبر میں ملکی بر آمدات 2ارب 90کروڑ30لاکھ ڈالرز کی بلند ترین سطح پر رہیں۔

اس حوالے سے اپنے ایک بیان میں مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد نے ملکی بر آمدات میں اضافہ کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ نومبر میں پاکستانی برآمدات میں 33 فیصد کا اضافہ ہوا ،نومبر میں 2.903 ارب ڈالر کی مجموعی برآمدات رہیں جبکہ گزشتہ سال نومبر میں 2.174 ارب ڈالر ز کی بر آمدات ریکارڈ کی گئی تھیں۔ نومبر2021 میں حکومت کا پاکستانی برآمدات کا ہدف 2.6 ارب ڈالر تھا، رواں مالی سال کے پہلے پانچ ماہ میں برآمدات میں 27 فیصد کا اضافہ ہوا ہے، اور اب تک پانچ ماہ میں 12.365 ارب ڈالر کی برآمدات کی گئی ہیں۔

(جاری ہے)

جبکہ گزشتہ مالی سال اسی عرصہ میں 9.747 ارب ڈالر کی برآمدات تھیں، رواں مالی سال کے پانچ ماہ میں حکومت کا برآمدات کا ہدف 12.2 ارب ڈالرز تھا۔ دوسری جانب پاکستان نے رواں مالی سال کے 5 ماہ کے دوران ریکارڈ ٹیکس بھی اکٹھا کر لیا۔ وزیر اعظم نے ایف بی آر کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا ہے کہ ایف بی آر نے گزشتہ سال کے مقابلے میں 37 فیصد زیادہ ٹیکس حاصل کیا ۔

اپنے بیان میں انہوں نے کہاکہ نومبر میں 35 فیصد زیادہ ٹیکس حاصل کیا گیا۔ اس حوالے سے ایف بی آر کے اعلامیہ کے مطابق رواں مالی سال کے دوران جولائی تا نومبر کے عرصے میں 36.5 فیصد زائد ٹیکس وصولیاں کی گئیں۔ ایف بی آر نے ہدف سے 298 ارب کی زائد ٹیکس وصولیاں کی ہیں۔ ایف بی آر نے گزشتہ مالی سال کے پہلے 5 ماہ میں 1695 ارب کی ٹیکس وصولیاں کی تھیں، جبکہ رواں سال کےپہلے 5 ماہ میں 2016 ارب کی ٹیکس وصولیوں کا ہدف رکھا تھا ۔ ایف بی آر ناصرف باآسانی اپنا ہدف حاصل کرنے میں کامیاب ہوا، بلکہ ہدف سے کھربوں روپے زائد اکٹھے کر لیے گئے۔ ایف بی آر نے 5 ماہ کے دوران ریکارڈ 2300 ارب روپے سے زائد اکٹھے کیے ہیں، نومبر کے ماہ میں 470 ارب روپے اکٹھے کیے گئے، جبکہ ہدف 406 ارب روپے کا تھا۔
>