وزیراعظم کا ”2 بچے خوشحال گھرانہ“ کی مشن سٹیٹمنٹ کے عملدرآمد پر زور

ہمیں آبادی پر قابو پاکردنیا کے ترقی یافتہ ممالک میں شامل ہونا ہے، بچوں کی پیدائش میں مناسب وقفہ ہونا چاہئے، خاندانی منصوبہ بندی میں علماء کرام کردار ادا کرسکتے ہیں۔ وزیر صحت پنجاب ڈاکٹریاسمین راشد

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ جمعرات 9 دسمبر 2021 17:25

وزیراعظم کا ”2 بچے خوشحال گھرانہ“ کی مشن سٹیٹمنٹ کے عملدرآمد پر زور
لاہور (اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 دسمبر2021ء) وزیر صحت پنجاب ڈاکٹریاسمین راشد نے مقامی ہوٹل میں محکمہ پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کئیراور ورلڈبنک کے زیراہتمام ”انڈرسٹینڈنگ پنجاب پالیسی انوائرمنٹ فارایڈوانسنگ فیملی پلاننگ آؤٹ کمز“کے عنوان پر منعقدہ ورکشاپ میں بطورمہمان خصوصی شرکت کی۔ورکشاپ میں سیکرٹری محکمہ پرائمری اینڈ سکنڈری ہیلتھ کئیرعمران سکندربلوچ، ڈی جی ہیلتھ سروسزڈاکٹر ہارون جہانگیر،پرنسپل سروسزانسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسزپروفیسرڈاکٹر طیبہ، یو این ایف پی اے سے ڈاکٹر شعیب، ڈاکٹراختر رشید، ڈاکٹرشاہد مگسی، ڈاکٹرسعید اختراور ورلڈبنک کے ہیلتھ افسران نے شرکت کی۔

ورکشاپ کے دوران پنجاب میں خاندانی منصوبہ بندی کیلئے جامع حکمت عملی پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

(جاری ہے)

صوبائی وزیرصحت ڈاکٹریاسمین راشدنے شرکاء سے اپنے خطاب میں کہا کہ پنجاب میں ما ں اور اور بچہ کی صحت کو یقینی بنانے کیلئے بنیادی اقدامات اٹھائے جارہے ہیں۔ وزیراعظم عمران خان نے اپناعہدہ سنبھالنے کے بعد پہلی تقریر میں ماں اور بچہ کی صحت بارے بات کی۔

وزیراعظم عمران خان نے ”2 بچے خوشحال گھرانہ“کی مشن سٹیٹمنٹ کے عملدرآمد پر زور دیا۔ پاکستان میں بڑھتی ہوئی آبادی پرقابو پانا انتہائی اہم ہوچکا ہے۔ ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا کہ بچوں کی پیدائش میں مناسب وقفہ ہونا چاہئے۔ اللہ پاک نے ماں کے دودھ میں بہت طاقت رکھی ہے۔ خاندانی منصوبہ بندی میں تعلیم یافتہ معاشرہ بنیادی کرداراداکرتا ہے۔

خاندانی منصوبہ بندی کیلئے اجتماعی سوچ پر کام کرناہوگا۔ صوبائی وزیر صحت نے کہاکہ خاندانی منصوبہ بندی کیلئے تمام سٹیک ہولڈرزکی موجودگی خوش آئندہے۔پنجاب میں مربوط حکمت عملی کے باعث کوروناکے خلاف جنگ میں سرخروہوئے ہیں۔خاندانی منصوبہ بندی میں علماء کرام انتہائی اہم کرداراداکرسکتے ہیں۔ ڈاکٹریاسمین راشدنے کہاکہ ہمیں ماں کی صحت کویقینی بناناہوگا۔

صحت مندماں ہی صحت مند معاشرہ کی بنیاد رکھ سکتی ہے۔ معاشرہ میں ماؤں کی صحت کی اہمیت بارے آگاہی مہم چلائی جائے گی۔ صوبائی وزیر صحت نے مزید کہا کہ انڈیا میں ایک ماں کے مرنے پر تاج محل اور سویڈن میں ماں کے مرنے پر مڈوائفری کالج بن رہا تھا۔ بطورقوم ہمیں خاندانی منصوبہ بندی پرکام کرنا ہوگا۔ خاندانی منصوبہ بندی کیلئے بھی مربوط حکمت عملی پر عملدرآمد کروایا جائے گا۔

ہمیں آبادی پر قابو پاکردنیا کے ترقی یافتہ ممالک میں شامل ہوناہے۔ ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا کہ سیکرٹری محکمہ پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کئیر بہت محنتی آفیسر ہیں۔ صوبائی وزیر صحت نے خسرہ وروبیلا سے بچاؤ کی قومی مہم کے دوران پنجاب کے 4 کروڑ 80 لاکھ بچوں کو ویکسینیٹ کرنے پر سیکرٹری صحت عمران سکندر بلوچ کو شاباش دی اور ورکشاپ کے انعقادپرمحکمہ پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کئیراور ورلڈ بنک کے افسران کی کاوش کو سراہا۔ سیکرٹری محکمہ پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کئیرعمران سکندربلوچ نے کہاکہ ورکشاپ کے انعقادپر سٹیک ہولڈرزکی کاوش لائق تحسین ہے۔ پنجاب میں خاندانی منصوبہ بندی کیلئے مربوط حکمت عملی پر کام کریں گے۔