بند کریں
صحت مضامینغذا اور صحتڈائٹنگ کے لیے اب چاول چھوڑنے کی ضرورت نہیں

مزید غذا اور صحت

پچھلے مضامین - مزید مضامین
ڈائٹنگ کے لیے اب چاول چھوڑنے کی ضرورت نہیں
چاول جو کہ زیادہ تر افراد کی پسندیدہ غذا کہلائے جاسکتے ہیں بہت کم افراد ایسے ہوں گے جو چاول کے لئے ناپسندیدگی کااظہار کریں گے ۔ یوں تو چاولوں میں اگر دیکھاجائے تو چکنائی کی مقدار کم ہوتی ہے لیکن اس میں کاربوہاریٹ زیادہ پایاجاتا ہے۔
چاول جو کہ زیادہ تر افراد کی پسندیدہ غذا کہلائے جاسکتے ہیں بہت کم افراد ایسے ہوں گے جو چاول کے لئے ناپسندیدگی کااظہار کریں گے ۔ یوں تو چاولوں میں اگر دیکھاجائے تو چکنائی کی مقدار کم ہوتی ہے لیکن اس میں کاربوہاریٹ زیادہ پایاجاتا ہے ۔ جس کی وجہ سے یہ وزن میں اضافے کا باعث بن جاتے ہیں ۔ اسی لئے اکثر ڈائٹیشن جب وزن کم کرنے کی بات کرتے ہیں تو کھانے میں سے چاول نکالنے کی بات کرتے ہیں ۔ لیکن کچھ تحقیق کار اس بات پر بھی اصرار کرتے ہیں کہ چاول کھانے سے وزن میں یا موٹاپے میں اضا فہ نہیں ہوتا ۔
چاول بہت اہم اناج مانا جاتا ہے ۔ دنیا کے درجنوں ممالک میں یہ کھانوں کا لازمی جزو سمجھاجاتا ہے ۔ اس کے علاوہ بھی یہ توانائی بحال کرنے کا فوری اور بہترین ذریعہ سمجھے جاتے ہیں ، غذائی توانائی کا 20 فیصد چاولوں پر مشتمل ہے۔ لیکن چاول میں اسٹارچ ہونے کی بناء پر اس کو ڈائٹنگ کرنے والوں کے لیے موضوع نہیں سمجھا جاتا ۔ لیکن اس کو پکانے کاایک ایسا حیرت انگیز طریقہ موجود ہے جو کہ اس کی غیر صحت بخش کمی کو دور کرسکتا ہے ۔
چاول اور اسٹارچ :
دنیا میں جتنے بھی اناج موجود ہیں ان میں چاول وہ غذاہیں جن میں سب سے زیادہ کاربوہائیڈریٹ موجود ہیں، اور اس میں مسئلہ ایسے پیدا ہوتا ہے کہ اسٹارچ ہضم ہوکر شکر کی صورت اختیار کرلیتا ہے اور شکر چکنائی میں تبدیل ہوجاتی ہے ۔ سری لنکا میں کئی گئی دو تحقیقات میں یہ بات سامنے آئی کہ ایک بہت آسان طریقے اگر چاولوں کو پکایا جائے تواس اسٹارچ کو بھی آپ کے لئے فائدہ مند بنایا جاسکتا ہے ۔ اور یہ چاولوں کے شوقین افراد کے لئے ایک بہت اچھی خبر ہے ۔
ناریل کے تیل کے جادو :
سدھیرجیمز جوکہ کالج آف کیمیکل سائنسزسری لنکا کے طالب علم ہیں ،انہوں نے پروفیسر ڈاکٹر پشپاراج کی سرکردگی میں یہ تحقیق کی کہ اگر چاولوں کوپکاتے وقت اس میں ناریل کا تیل ملادیاجائے اور پھر اس کو فوراََ ہی ٹھنڈا ہونے کو رکھ دیا جائے تو وہ چاولوں کی کمپوزیشن کو تبدیل کردیتا ہے ۔
پکانے کے دوران چکنائی کااضافہ ان اسٹارچ کو ہضم کرنے میں مدددیتا ہے ۔ چاولوں میں یہ سادہ سا اضافہ دراصل چاولوں میں موجود کیلوریز کی مقدار کو مجموعی طور پر کم کرکے 50 فیصد تک گھٹا دیتا ہے ۔
پکانے کا جادوئی طریقہ :
اس کو پکانے کا طریقہ بہت سادہ اور آسان ہے لیکن اس کے اثرات جادوئی ہیں ۔
چاولوں کے لئے پانی ابلنے کورکھیں ۔
اب چاولوں کے وزن کا تین فیصد اس میں ناریل کا تیل شامل کریں ۔
اب چاول اس میں ڈال کر ناریل طریقے سے ابال لیں ۔
جب یہ پک جائیں تو اس کو تقریباََ 12گھنٹے کے لئے ریفریجریٹر میں رکھ دیں ۔ تیل ، چاولوں کے ساتھ مل کر اس کے اسٹارچ کی ہیئت تبدیل کرکے اس کو صحت بخش بنادیتا ہے ۔ چاولوں کو ٹھنڈا کرنے سے اس میں موجود اسٹارچ کی غذائی صلاحیت تبدیل ہوجاتی ہے اور یہ آپ کو نقصان کے بجائے فائدے کا موجب بن جاتے ہیں ۔ پھر چاہے آپ اس کو دوبارہ گرم کریں اس کی افادیت کم نہیں ہوگی ۔
جیمز اور پشپاراج نے سرلنکا میں موجود چاولوں کی 38 سے زائد اقسام پر یہ کامیاب تجربہ کیا۔ اور ہر دفعہ نتیجہ بہترین رہا۔

(1) ووٹ وصول ہوئے