نواز شریف کا مسئلہ ووٹ کی عزت نہیں ،ذاتی اقتدار ہے ،جمہوری نظام کو خاندانی اقتدار میں بدل دیا ‘ پیپلز پارٹی

آئین کو عملی طور پر معطل رکھ کر نواز شریف نے چھوٹے صوبوں کے حقوق غصب کئے ، 35سالوں میں جمہوریت مخالف سازشوں پر قوم سے معافی مانگیں ‘ سیکرٹری اطلاعات سینیٹر مولا بخش چانڈیو کا ردعمل

منگل اپریل 21:18

نواز شریف کا مسئلہ ووٹ کی عزت نہیں ،ذاتی اقتدار ہے ،جمہوری نظام کو خاندانی ..
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 اپریل2018ء) پاکستان پیپلز پارٹی نے کہا ہے کہ نواز شریف کا مسئلہ ووٹ کی عزت نہیں بلکہ ذاتی اقتدار ہے ،35سالوں میں جمہوریت مخالف سازشوں پر قوم سے معافی مانگیں ، آئین کو عملی طور پر معطل رکھ کر نواز شریف نے چھوٹے صوبوں کے حقوق غصب کئے اور جمہوری نظام کو خاندانی اقتدار میں بدل دیا۔ پیپلز پارٹی کے سیکرٹری اطلاعات سینیٹر مولا بخش چانڈیو نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کی تقریر پر اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ نواز شریف نے ووٹ کی بے توقیری کی تاریخ کا ذکر تو کیا لیکن اپنا کردار کیوں بھول گئے، نواز شریف پینتیس سالوں سے جمہوریت مخالف سازشوں میں اپنے کردار پر قوم سے معافی مانگیں، نواز شریف نے جونیجو سے لے کر محترمہ بینظیر بھٹو اور یوسف رضا گیلانی سمیت ہر وزیراعظم کے خلاف سازش کی، نواز شریف اپنے کردار پر پشیمانی کا اظہار کرتے تو لگتا کہ شاید انہیں پچھتاوا ہے، پشیمانی اور پچھتاوے کے بنا نواز شریف جتنی چاہے تقریریں کریں کوئی انہیں سنجیدہ نہیں لے گا۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ عوامی مینڈیٹ پر ڈاکے ڈالنے والے نواز شریف کی زبان سے ووٹ کو عزت دو کی بات اچھی نہیں لگتی، نواز شریف پارلیمنٹ کو عزت دیتے تو آج ملک اس حال سے نہ گذر رہا ہوتا، آئین کو عملی طور پر معطل رکھ کر نواز شریف نے چھوٹے صوبوں کے حقوق غصب کئے، پارلیمنٹ کو ربڑ سٹمپ بنا کر نواز شریف محلات میں بیٹھ کر فیصلے کرتے رہے، پی پی پی نے جمہوری عمل کو مستحکم کیا نواز شریف نے اسے خاندانی اقتدار میں بدل دیا۔