مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسیز کا تشدد ،ظلم ،قتل و غارت کشمیریوں کی آزادی کا راستہ نہیں روک سکتے ‘اقوام متحدہ کی قراردادیں ہی مسئلہ کا اصل حل ہے ‘بھارتی فوج کا کشمیر پر قبضہ جابرانہ فعل ہے جس کو کشمیری عوام نے کبھی بھی تسلیم نہیںکیا

ْمسلم کانفرنس کے مرکزی رہنما سابق امیدوار قانون ساز اسمبلی حاجی عبدالقیوم قمر کی بات چیت

جمعرات اپریل 14:52

میرپور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 اپریل2018ء) آل جموں وکشمیر مسلم کانفرنس کے مرکزی رہنما سابق امیدوار قانون ساز اسمبلی حلقہ ایل اے تھری حاجی عبدالقیوم قمر ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسیز کا تشدد ،ظلم ،،قتل و غارت کشمیریوں کی آزادی کا راستہ نہیں روک سکتے ۔۔اقوام متحدہ کی قراردادیں ہی اس مسئلہ کا اصل حل ہے ۔۔بھارتی فوج کی جانب سے کشمیر پر قبضہ ایک جابرانہ فعل ہے جس کو کشمیری عوام نے کبھی بھی تسلیم نہیںکیا ۔

مقبوضہ کشمیر کی آزادی تک کشمیری چین سے نہیں بیٹھیں گئے۔ مقبوضہ کشمیر میں قتل ہونیوالی ننھی آصفہ کا واقعہ عالمی برادری کے ضمیر کو چیخ چیخ کر جھنجھوڑ رہا ہے، بھارتی انتہا پسندوں سے اب معصوم کلیاں بھی محفوظ نہیں رہیں، انڈین انتہاء پسند انسانیت کی تمام حدیں پھلانگ چکے ہیں، ایسے وقت پر بھی اگر انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں کے چپ کا روزہ نہ توڑا تو دنیا میں قیام امن ایک خواب کی صورت اختیار کر جائے گاآزاد کشمیر کے عوام مقبوضہ کشمیر کے بھائیوں کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑے ہیں۔

(جاری ہے)

ان خیالات کا اظہار انہوں نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ آل جموں وکشمیر مسلم کانفرنس کے مرکزی رہنما سابق امیدوار قانون ساز اسمبلی حلقہ ایل اے تھری حاجی عبدالقیوم قمر ایڈووکیٹ نے کہا کہ اقوام متحدہ نے کشمیری عوام سے جو وعدہ کر رکھا ہے اس پر عمل درآمد کرایا جائے ۔۔بھارت کشمیریوں کو اپنے ساتھ ملانے کے لئے مختلف حربے استعمال کر رہا ہے۔

مگر ان تمام اقدامات کے باوجود کشمیری عوام نے اپنے قوت بازو سے اس کے خلاف تحریک شروع کی بھارت جب بندوق کی نوک پر کشمیریوں کو اپنے ساتھ رہنے پر راضی نہ کرسکا تو اس نے مقبوضہ کشمیرمیں کالے قوانین متعارف کرائے اور دہشت گردی کے نام پر کشمیر ی عوام کو نشانہ بنایا۔آل جموں وکشمیر مسلم کانفرنس کے مرکزی رہنما سابق امیدوار قانون ساز اسمبلی حلقہ ایل اے تھری حاجی عبدالقیوم قمر ایڈووکیٹ نے کہا کہ بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں جاری حق خودارادیت کی جدوجہد کو دبانے کے لیے تمام تر ہتھکنڈے استعمال کیے مگر بھارت کا جدید اسلحہ کشمیریوں کے جذبہ آزادی کے سامنے ناکام رہا، بھارت اسی لیے ایل او سی پر بوکھلاہٹ کا مظاہرہ کرتا ہے کہ دنیا کی توجہ مقبوضہ کشمیر سے ہٹائی جا سکے، مگر عالمی برادری بھارت کی مکاریوں کو سمجھ چکی ہے، حال ہی میں مقبوضہ کشمیر میں ایک ننھی کلی آصفہ کے ساتھ جنسی درندگی اور اس کے قتل نے انسانیت کو ہلا کر رکھ دیا ہے، ننھی آصفہ کی روح چیخ چیخ کر دنیا سے انصاف مانگ رہی ہے، اس لیے عالمی انسانی حقوق کی تنظیموں، دنیا میں امن کے دعویداروں اور اقوام متحدہ کو اب خاموشی ترک کر کے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم بند اور کشمیریوں کو آزادی کا حق دلانا ہوگا،۔