نوازشریف کوانجائنا کا خطرہ لاحق ہوسکتا ہے، ذاتی معالج ڈاکٹرعدنان

نوازشریف کے بازومیں وقفے وقفے سے دردکی شکایت ہے، فوری علاج نہ کیا گیا توان کی صحت کوکوئی بھی خطرہ لاحق ہوسکتا ہے۔ سابق وزیراعظم نوازشریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کی گفتگو

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ جمعہ جنوری 18:30

نوازشریف کوانجائنا کا خطرہ لاحق ہوسکتا ہے، ذاتی معالج ڈاکٹرعدنان
لاہور(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔11 جنوری2019ء) سابق وزیراعظم نوازشریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان نے انکشاف کیا ہے کہ نوازشریف کو انجائنا کا خطرہ لاحق ہوسکتا ہے، نوازشریف کے بازومیں وقفے وقفے سے دردکی شکایت ہے، فوری علاج نہ کیا گیا توان کی صحت کوکوئی بھی خطرہ لاحق ہوسکتا ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق جیل حکام نے نوازشریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کوملاقات کی اجازت نہیں دی۔

ڈاکٹرعدنان کا کہنا ہے کہ میں نے صبح سے شام تک کوٹ لکھپت جیل میں ملاقات کا انتظار کرتا رہا۔ لیکن مجھے ملاقات کی اجازت نہیں دی گئی۔ سابق وزیراعظم کے بازومیں وقفے وقفے سے دردکی شکایت ہے۔ نوازشریف د ل کے عارضے میں مبتلا ہیں اس لیے ان کو خطرات لاحق ہوسکتے ہیں۔ سابق وزیراعظم نوازشریف کے ذاتی معالج کا کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم نوازشریف کو انجائنا کا خطرہ لاحق ہوسکتا ہے۔

(جاری ہے)

فوری علاج نہ کیا گیا تو نوازشریف کی صحت سے متعلق کوئی بھی خطرناک صورتحال پیدا ہوسکتی ہے۔ واضح رہے کوٹ لکھپت جیل کے حکام کی جانب سے العزیز ریفرنس میں قید کی سزا کاٹنے والے سابق وزر یر اعظم محمد نوازشریف سے اہل خانہ، رشتہ داروں، دوستوں اور پارٹی رہنمائوں کی ملاقات کیلئے جمعرات کا دن مقرر کیا گیا ہے۔ گزشتہ روز نواز شریف سے انکی والدہ بیگم شمیم اختر، بیٹی مریم نواز، بھتیجے حمزہ شہباز ،نواسے جنید صفدر، مرحوم بھائی عباس شریف کے اہل خانہ اور دیگر قریبی عزیزوں نے ملاقات کی ۔

اہل خانہ نواز شریف کے لئے دوپہر کا کھانا، ادویات اور دیگر ضروری سامان بھی ہمراہ لائے ۔اہل خانہ اور نواز شریف نے دوپہر کا کھانا اکٹھے کھایا۔ ذرائع کے مطابق نواز شریف اپنے والدہ کے گلے لگے اور انہیں تسلی دیتے رہے جبکہ والدہ انہیں دعائیں دیتی رہیں ۔پارٹی رہنماؤں مشاہد اللہ خان، رانا ثنا اللہ ، خواجہ آصف ، مصدق ملک ، مریم اورنگزیب ، پرویز رشید ، آصف کرمانی ، رانا تنویر ، ملک ندیم کامران ،نزہت صادق ،منشا اللہ بٹ ،پیر اشرف رسول ،مرزا جاوید ،عظمیٰ بخاری ، سمیع اللہ خان ،وارث کلو ،سابق مشیر خارجہ طارق فاطمی ،نجم سیٹھی اورجگنو محسن نے بھی نواز شریف سے ملاقات کی۔

پارٹی رہنمائوں اور دیگر نے نواز شریف سے ان کی صحت بارے آگاہی حاصل کی ۔ ذرائع کے مطابق نواز شریف نے ملاقات کے لئے آنے والے رہنماؤں سے ملک کی مجموعی صورتحال خصوصاً معاشی اور عوام کے حالات بارے آگاہی حاصل کی۔ نواز شریف نے مریم نواز ، حمزہ شہباز اور پارٹی رہنمائوں سے ملک کی مجموعی سیاسی صورتحال ، احتساب عدالت کے فیصلے کے حوالے سے قانونی معاملات اور پارٹی امور کے حوالے سے بھی تبادلہ خیال کیا گیا ۔ گزشتہ روز بھی (ن) لیگ کے کارکنوں کی ایک بڑی تعداد نواز شریف اور ان کے اہل خانہ سے اظہار یکجہتی کیلئے کوٹ لکھپت جیل کے باہر جمع رہی اور کارکنوں نے شریف خاندان کی گاڑیوں پر پھولوں کی پتیاں نچھاور کیں اور ان نواز شریف کے حق میں نعرے لگائے ۔