وزیراعظم نے زیادتی کے مجرمان کو نامرد کرنے کے قانون کی منظوری دے دی

سنگین نوعیت کا معاملہ ہے، قانون سازی میں کسی قسم کی تاخیر نہیں کریں گے۔وزیراعظم عمران خان

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان منگل نومبر 14:38

وزیراعظم نے زیادتی کے مجرمان کو نامرد کرنے کے قانون کی منظوری دے دی
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 نومبر2020ء) وفاقی کابینہ نے زیادتی کے مجرموں کو سزائیں دینے کے حوالے سے قانون سازی کی منظوری دے دی۔وزیراعظم نے زیادتی کے مجرمان کو نامرد کرنے کے قانون کی منظوری دے دی۔ تفصیلات کے مطابق آج وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں زیادتی کے واقعات کی روک تھام کے لیے قانون سازی پر بحث کی گئی۔

اجلاس میں مجرمان کو سخت سزائیں دینے کی سفارشات کی منظوری دے دی گئی۔وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ متاثرہ بچے و خواتین بلا خوف و خطر اپنی شکایات درج کرا سکیں۔متاثرہ خواتین و بچوں کی شناخت کا خاص خیال رکھا جائے گا،یقینی بنایا جائے کہ سخت سے سخت قانون کا اطلاق ہو۔ وفاقی وزراء نے زیادتی کے مجرموں کو سخت سزائیں دینے کا مطالبہ کیا ہے،بعض وزراء نے زیادتی کے مجرموں کو پھانسی کی سزا قانون کا حصہ بنانے کا مطالبہ کیا۔

(جاری ہے)

وزراء نے رائے دی کہ زیادتی کے مجرمان کو سرعام پھانسی کے تختے پر لٹکا دیا جائے۔وفاقی وزیر فیصل واوڈا، اعظم سواتی اور نورالحق نے بھی پھانسی کی حمایت کی۔وزیراعظم نے رائے دی کہ ابتدائی طور پر کیسٹریشن کے قانون کی طرف جانا ہو گا۔قانونی ٹیم کی جانب سے ریپ آرڈیننس کے مسودے پر کام مکمل کر لیا گیا ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ ہم نے اپنے معاشرے کو محفوظ ماحول دینا ہے۔

وزیراعظم نے کہا ہے کہ سنگین نوعیت کا معاملہ ہے، قانون سازی میں کسی قسم کی تاخیر نہیں کریں گے۔عوام کے تحفظ کے لیے واضح اور شفاف انداز میں قانون سازی ہو گی۔وزیراعظم نے یہ بھی ہدایت کی ہے کہ متاثرہ خواتین و بچوں کی شناخت کے تحفظ کا خاص خیال رکھا جائے۔ وزیراعظم نے زیادتی کے مجرمان کے لیے کیسٹریشن کا قانون لانے کی بھی اصولی منظوری دے دی۔