بند کریں
صحت صحت کی خبریںسرکاری ہسپتالوں میں غیر معیاری ادویات کی فراہمی کی شکایات کے ازالے کے لئے مینجمنٹ کمیٹی قائم ..

صحت خبریں

وقت اشاعت: 26/06/2013 - 23:18:11 وقت اشاعت: 26/06/2013 - 23:14:36 وقت اشاعت: 26/06/2013 - 23:13:16 وقت اشاعت: 26/06/2013 - 23:12:16 وقت اشاعت: 26/06/2013 - 14:05:26 وقت اشاعت: 25/06/2013 - 19:50:55 وقت اشاعت: 25/06/2013 - 17:37:10 وقت اشاعت: 25/06/2013 - 17:36:37 وقت اشاعت: 25/06/2013 - 17:36:03 وقت اشاعت: 25/06/2013 - 15:22:44 وقت اشاعت: 25/06/2013 - 13:44:47

سرکاری ہسپتالوں میں غیر معیاری ادویات کی فراہمی کی شکایات کے ازالے کے لئے مینجمنٹ کمیٹی قائم کر دی، جعلی اور غیر معیاری ادویات زہر قاتل ہیں ،لوگوں کی زندگی سے کھیلنے کا گھناؤنا کھیل کھیلنے نہیں دیں گے ، دھندے میں ملوث افراد کو قرار واقعی سزا دی جائے گی صوبائی حکومت ڈونرز کی فراہم کردہ پائی پائی صحیح استعمال کریگی ،صوبائی وزیر صحت و اطلاعات شوکت یوسفزئی کا یونیسف کے سربراہ کی طرف سے دی گئی بریفنگ کے موقع پر اظہار خیال

پشاور (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔آئی این پی۔25جون۔2013ء)خیبر پختونخوا کے وزیر صحت و اطلاعات شوکت علی یوسفزئی نے صحت کے شعبے میں کام کرنے والے ڈونرز کے تعاون کا شکریہ ادا کرتے ہوئے انہیں یقین دلایا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کی صوبائی حکومت کو فراہم کردہ ایک ایک پائی صحیح استعمال ہو گی اور شفافیت کو یقینی بنانے کے لئے اس کا حساب کتاب ہر وقت دستیاب ہو گا ۔

یہ یقین دہانی انہو ں نے پشاور میں یونیسف کے سربراہ ڈاکٹر جمیل احمد کی طرف سے دی جانے والی بریفنگ کے دوران کیا ۔ انہو ں نے وزیر موصوف کو صحت کے شعبے میں یونیسف کے کردار اور صحت کے مختلف شعبوں میں فراہم کی جانے والی خدمات کے بارے میں تفصیل سے بتایا ۔ انہو ں نے مزید بتایا کہ ا ن کے پروگرام کا بڑا ٹارگٹ بچے اور خواتین ہیں اور بچوں اور خواتین کی شرح اموات کو کم تر کرنے کے لئے کوشاں ہیں ۔

شوکت یوسفزئی نے کہا کہ صوبائی حکومت صحت کے شعبے میں نمایاں اصلاحات کر رہی ہے اور حکومت کی پہلی توجہ سرکاری ہسپتالوں میں ایمرجنسی سہولیات کی بہتری پر مرکوز ہے جبکہ نئی عمارات تعمیر کرنے کی بجائے ہسپتالوں میں موجود سہولیات کو اپ گریڈ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے انہو ں نے کہا کہ حکومت میں آنے سے قبل ہم نے صحت اور تعلیم کے شعبوں میں بہت کچھ کام کیا ہے اور اب اس کو عملی جامہ پہنایا جائے گا ۔

صحت کے شعبے کا ذکر کرتے ہوئے وزیر صحت نے کہا کہ ہم ہسپتالوں میں ڈاکٹروں کی حاضری کو یقینی بنانے کے لئے سینئر اور جونیئر تمام ڈاکٹروں کو حاضری رجسٹرڈ میں اپنی حاضریاں لگانے کا پابندبنائیں گے اگر کوئی ڈاکٹر حاضری نہیں لگائے گا تو وہ غیر حاضر تصور ہو گا اور اس کے خلاف سخت قانونی کارروئی ہو گی اسی طرح سرکاری ہسپتالوں میں غیر معیاری ادویات کی فراہمی کی شکایات بھی موصول ہو ئی ہیں جس کے ازالے کے لئے ہم نے باقاعدہ طورپر ایک مینجمنٹ کمیٹی قائم کی ہے جس میں صحافی برادری کی نمائندگی بھی ہو گی ۔

صوبائی وزیر نے کہا کہ جعلی اور غیر معیاری ادویات زہر قاتل اور یہ لوگوں کی زندگی سے کھیلنے کے مترادف ہے لہذا ہم کسی کو یہ گھناؤنا کھیل کھیلنے نہیں دیں گے اور اس غیر قانونی کاروبار میں ملوث افراد کو قرار واقعی سزا دی جائے گی ۔ انہو ں نے کہا کہ اس مقصد کے لئے ہیلتھ ریگولیٹری اتھارٹی کو بھی فعال بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ انہو ں نے کہا کہ ہم صوبے میں ہر شعبے میں ایسا فول پروف نظام لائیں گے جس میں کوئی چاہنے کے باوجود بھی کرپشن نہ کر سکے۔

وزیر موصوف نے کہا کہ وسائل کی کوئی کمی نہیں ۔ مائنڈ سیٹ اور اپنے رویوں میں تبدیلی لانے کی ضرورت ہے انہو ں نے کہا کہ صوبے میں حسب وعدہ تبدیلی لانے کے لئے میرٹ پر اچھے ، مخلص اور دیانت دار لوگوں کو آگے لایا جائے گا اور اس میں کسی قسم کے ذاتی مفاد یا پسند و ناپسند کو ملحوظ خاطر نہیں رکھا جائے گا۔
25/06/2013 - 19:50:55 :وقت اشاعت