بند کریں
صحت صحت کی خبریںپارکنسن سمیت دیگر مہلک وخطرناک بیماریوں کے علاج کیلئے سٹیٹ آف دی آرٹ طبی ادارے قائم کئے جا ..

صحت خبریں

وقت اشاعت: 11/04/2015 - 17:58:42 وقت اشاعت: 11/04/2015 - 17:40:15 وقت اشاعت: 11/04/2015 - 17:27:09 وقت اشاعت: 11/04/2015 - 16:37:44 وقت اشاعت: 11/04/2015 - 16:31:57 وقت اشاعت: 11/04/2015 - 15:58:50 وقت اشاعت: 11/04/2015 - 14:34:35 وقت اشاعت: 11/04/2015 - 13:30:05 وقت اشاعت: 11/04/2015 - 12:43:37 وقت اشاعت: 11/04/2015 - 12:37:12 وقت اشاعت: 11/04/2015 - 11:08:14

پارکنسن سمیت دیگر مہلک وخطرناک بیماریوں کے علاج کیلئے سٹیٹ آف دی آرٹ طبی ادارے قائم کئے جا رہے ہیں‘ مجتبیٰ شجاع الرحمن

لاہور ( اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔11 اپریل۔2015ء)وزیرایکسائز و ٹیکسیشن، خزانہ و قانون پنجاب مجتبیٰ شجاع الرحمن نے کہاہے کہ حکومت پاکنسن سمیت مہلک اور خطرناک بیماریوں کے علاج معالجہ کے لئے سٹیٹ آف دی آرٹ طبی ادارے قائم کررہی ہے اور 2745ملین روپے کی لاگت سے جدید انسٹیٹیوٹ آف نیوروسائنسزقائم کیا جائے گاتاکہ لوگوں کو علاج معالجہ کی معیاری سہولتیں سستی اورمستحق مریضوں کو بلامعاوضہ دستیاب ہوں، اس سال ایمرجنسی وارڈ آپریشنل کرنے کے لئے 650ملین روپے کے فنڈز فراہم کئے گئے ہیں، کڈنی ولیور ٹرانسپلانٹ انسٹی ٹیوٹ کی عمارت کے لئے 50 ایکڑ اراضی مختص کر دی گئی ہے جس کے لئے مطلوبہ فنڈز فراہم کئے جائیں گے۔

عالمی یوم پارکنسن کے حوالے سے ڈاکٹرز کے وفود سے گفتگو کرتے ہوئے مجتبیٰ شجاع الرحمن نے کہا کہصوبائی حکومت نے ملینیم ڈویلپمنٹ اہداف حاصل کرنے کے لئے 2ارب روپے فراہم کئے۔نوزائیدہ بچوں کوادویات وطبی سہولیات کی بلاتعطل فراہمی کے لیے 1.80۔ارب رو پے کے فنڈز فراہم کئے جبکہ صوبہ میں بچوں کے نئے تین ہسپتال قائم کرنے کے لئے12ارب روپے کے فنڈز فراہم کئے جائیں گے اور متعدی امراض کے کنٹرول کے لیے 2۔

ا رب روپے اضافی مختص کئے گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ عوام میں پاکنسن، کینسر، برین ٹیومر ودیگر مہلک بیماریوں کے علاج معالجہ بارے شعور بیدار کیا جائے کہ بروقت تشخیص اور علاج سے ان بیماریوں سے نجات ممکن ہے - مجتبیٰ شجاع الرحمن نے کہا کہ عام آدمی کو صحت کی معیاری سہولتیں فراہم کرنے کیلئے مطلوبہ فنڈز فراہم کئے جاتے رہیں گے اور رواں سال مئی تک700بنیادی مراکز صحت میں 24گھنٹے عوام کو طبی سہولتیں فراہم کرنے کے انتظامات کئے جا رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پنجاب ہیلتھ ریفارمز روڈمیپ کے تحت معیاری طبی سہولتوں کی فراہمی کیلئے سرکاری ہسپتالوں اور طبی مراکز کو جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کیا جا رہا ہے اور صحت عامہ کی سہولتوں کی بہتری کے حوالے سے ڈیفڈ کے نمائندے مائیکل باربر نے بھی حکومتی کوششوں کو سراہا ہے اور بچوں کو حفاظتی ٹیکہ جات کی کوریج بہتربنانے پر پنجاب حکومت کے اقدامات کی تعریف کی۔

مجتبیٰ شجاع الرحمن نے کہاکہ دنیا میں سالانہ ایک کروڑ27 لاکھ سے زائد افراد کینسر کے موذی مرض میں مبتلا ہوتے ہیں جن میں سے ہر سال 81 لاکھ افراد زندگی کی بازی ہار جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ طبی ماہرین کے مطابق صرف پاکستانی خواتین میں سالانہ 90 ہزار سے زیادہ کینسر کے کیس رپورٹ ہوتے ہیں جبکہ حکومت نے جناح ہسپتال ،الائیڈ ہسپتال ودیگر ٹیچنگ ہسپتالوں میں کینسر کے علاج کے لئے جدید مشینیں نصب کر دی ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ4ارب روپے سے ہیلتھ انشورنس کارڈ سکیم شروع کی جارہی ہے جس کی بدولت کم آمدنی والے افراد سرکاری ہسپتالوں کے علاوہ بہترین نجی طبی اداروں میں بھی علاج کی مفت سہولت حاصل کر سکیں- انہوں نے کہا کہ کم وسیلہ افراد کو صحت کی معیاری سہولیات و ادویات کی بلا معاوضہ فراہمی کے لئے8ارب 75 کروڑ روپے ، گردے کے مریضوں کے لئے ڈائلسز کی سہولت برقرار رکھی گئی ہے جس کے لئے 60 کروڑ روپے کے فنڈز فراہم کئے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ترقی پذیر اضلاع خصوصا جنوبی پنجاب کے علاقوں کے لئے موبائل ہیلتھ یونٹس فراہم کئے جائیں گے جس کے لئے ایک ارب روپے کے فنڈز مختص کئے گئے ہیں-

11/04/2015 - 15:58:50 :وقت اشاعت