اُردو پوائنٹ پاکستان اسلام آباداسلام آباد کی خبریںدرختوں کی کٹائی کیس ،ْ چیف جسٹس نے ڈریپ کے چیئر مین کی تقرری نہ ہونے ..

درختوں کی کٹائی کیس ،ْ چیف جسٹس نے ڈریپ کے چیئر مین کی تقرری نہ ہونے پر نوٹس لے لیا

ڈریپ کا چیئرمین نہ لگنے سے بہت سے کام رکے ہوئے ہیں ،ْحکومت بتائے کہ ڈریپ کا چیئرمین کب لگایا جائے گا ،ْ چیف جسٹس , پولی کلینک میں مریض لائنوں میں لگے رہتے ہیں، جب ان کی باری آتی ہے تو ادویات ختم ہو جاتی ہیں ،ْعدالت عظمیٰ , رجسٹرار آفس سروے جنرل آف پاکستان سے رابطہ کر کے وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کی حد بندی معلوم کر ے ،ْ سپریم کورٹ

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 اکتوبر2018ء)سپریم کورٹ آف پاکستان میں درختوں کی کٹائی کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار نے ڈریپ کے چیئرمین کی تقرری نہ ہونے پر نوٹس لیتے ہوئے کہا ہے کہ ڈرگ ریگیولیٹری اتھارٹی پاکستان (ڈریپ) کا چیئرمین نہ لگنے سے بہت سے کام رکے ہوئے ہیں ،ْحکومت بتائے کہ ڈریپ کا چیئرمین کب لگایا جائے گا۔

چیف جسٹس پاکستان نے پولی کلینک اسلام آبادمیں ادویات کی عدم دستیابی کا بھی نوٹس لیا اور کہا کہ پولی کلینک میں مریض لائنوں میں لگے رہتے ہیں، جب ان کی باری آتی ہے تو ادویات ختم ہو جاتی ہیں۔انہوں نے حکم دیا کہ اسلام آبادکے پولی کلینک کے پیچھے ارجنٹینا پارک ہے، اس پارک کو پولی کلینک کی توسیع میں شامل کریں اور بتایا جائے کہ پولی کلینک کی توسیع کب شروع ہو گی۔

(خبر جاری ہے)

علاوہ ازیں مارگلہ ہلزمیں درختوں کی کٹائی سیمتعلق ازخودنوٹس کی سپریم کورٹ میں سماعت کے دوران سرکاری وکیل نے عدالت عظمیٰ کے روبرو کہا کہ سی ڈی اے نے منصوبہ بنایا ہے کہ دیمک زدہ درختوں کو کاٹا جائیگا۔انہوں نے کہا کہ ایک دیمک زدہ درخت کو کاٹ کر 10نئے پودے لگائے جائیں گے۔چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ جو دیمک زدہ درخت ہیں انہیں کاٹ لیں، سی ڈی اے اپنا پلان دے۔سرکاری وکیل نے کہا کہ اسلام آباد کی حد بندی سے متعلق رپورٹ نہیں آئی ہے۔عدالت عظمیٰ نے حکم دیا کہ رجسٹرار آفس سروے جنرل آف پاکستان سے رابطہ کر کے وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کی حد بندی معلوم کرے

اپنی رائے کا اظہار کریں -

اسلام آباد شہر کی مزید خبریں